ترکی : امریکا سمیت 10 ممالک کے سفیر ناپسندیدہ قرار

استنبول : ترکی میں ترک صدر رجب طیب اردوان نے امریکا اور کینیڈا سمیت 10 ممالک کے سفیروں کو ناپسندیدہ قرار دینےکا حکم دے دیا ہے ۔

ایک غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ناپسندیدہ قرار دیے جانے والے ملکوں کے سفیروں میں امریکا ، کینیڈا ، فرانس ، ڈنمارک ، فن لینڈ ، ہالینڈ ، نیوزی لینڈ ، ناروے اور سویڈن شامل ہیں ۔

کیونکہ ان سفیروں نے غداری اور بغاوت کے مقدمات کا سامنا کرنے والے عثمان کوالا کی حمایت میں بیان دیا تھا جس کے پیش نظر ترک صدر کا مذکورہ بیان سامنے آیا ہے ۔

جناب ترک صدر طیب اردوان کا کہنا تھا کہ جن سفیروں کو ترکی کی سمجھ نہیں آ رہی تو انھیں ہمارا ملک چھوڑ دینا چاہیے ۔

دوسری طرف ترک صدر رجب طیب اردوان کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت طالبان سے براہ راست بات چیت کر رہی ہے تاکہ بین الاقوامی افواج کے انخلا کے بعد کابل ائیرپورٹ کا مشترکہ انتظام سنبھالنے میں مدد سے متعلق حتمی فیصلے کیے جاسکیں ۔

ایک عرب میڈیا کے مطابق ترکی اور طالبان کے درمیان بات چیت کابل ائیرپورٹ پر واقع عارضی ترک سفارت خانے کی عمارت میں ساڑھے تین گھنٹے جاری رہی ہے ۔

مزید اس حوالے سے ترک صدر اردوان نے کہا ہے کہ کابل ائیرپورٹ چلانے میں تکنیکی تعاون کے لیے طالبان کی درخواست پر غور کر رہے ہیں ۔

ترک صدر کا کہنا ہے کہ ائیرپورٹ سنبھالنے کے فیصلے سے پہلےکابل میں امن و امان کی بحالی ضروری ہے، ضروت پڑی تو دوبارہ بات چیت کریں گے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button