اسرائیل کی اعلی قیادت کا دورہ متحدہ عرب امارات

پیر کے روز اسرائیلی وزیر خارجہ کے دفتر نے بتایا کہ اسرائیل کے وزیر خارجہ یائر لاپڈ جلد ہی متحدہ عرب امارات کے دورے پر جائیں گے ، جب سے دونوں ممالک کے تعلقات معمول پر لانے پر اتفاق ہوا ہے کسی بھی اسرا ئیلی اعلی قیادت کا یہ پہلا دورہ عرب ہوگا ۔

اسرائیل ، متحدہ عرب امارات اور بحرین کے ساتھ ستمبر میں تعلقات معمول پر لایا تھا اور یہودی ریاست نے گذشتہ سال دو دیگر عرب اقوام مراکش اور سوڈان کے ساتھ بھی تعلقات معمول پر لانے پر اتفاق کیا تھا ۔

ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی وزیر خارجہ یائر لاپڈ کا متحدہ عرب امارات کا یہ پہلا اور تاریخی سرکاری دورہ ہوگا ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ شیخ عبد اللہ بن زاید النہیان 30 جون کو انکے دو روزہ دورے کے میزبان ہوں گے ۔

یا ئر لیپڈ اسرائیل میں مخلوط حکومت کے حامی ہیں جو کے 13 جون کو اقتدار میں آئے تھے ، انہوں نے طویل عرصے سے اسرائیل کی خدمت کرنے والے وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کو اقتدار سے ہٹا دیا تھا ۔

چند اسرائیلی وزرا اس سے قبل بھی متحدہ عرب امارات کا دورہ کر چکے ہیں ، لیکن اس اہم دورے کو انجام دینے والے یائرلیپڈ سب سے سینئر اسرائیلی ہیں اور سرکاری دورہ کرنے والے پہلے فرد ہیں ۔

بیان میں مزید کہا گیا ، کے اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے مابین تعلقات ایک اہم رشتہ ہیں ، جس کے ثمرات نہ صرف دونوں ممالک کے شہریوں بلکہ پورے مشرق وسطی سے حاصل ہوں گے ۔

وزیر خارجہ یائرلیپڈ ابوظہبی میں اسرائیلی سفارت خانے کے علاوہ دبئی میں اسرائیل کے جنرل قونصل خانے کا افتتاح بھی کریں گے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button