دنیا کے امیر ترین جوڑے میں طلاق کا فیصلہ

ارب پتی بل اور میلنڈا گیٹس ، جو دنیا کی سب سے بڑی نجی رفاہی فاؤنڈیشن میں سے ایک کے مشترک بانی ہیں نے شادی کے 27 سال بعد پیر کو طلاق کے لئے  مقدمہ دائر کیا ہے لیکن انہوں نے مل کر اپنے مخیر کام کو جاری رکھنے کا وعدہ کیا ہے ۔

مائیکروسافٹ کارپوریشن کے شریک بانی 65 سالہ بل گیٹس اور ان کی شریک حیات 56 سالہ میلنڈا فرانسیسی گیٹس نے مشترکہ درخواست میں یہ دعویٰ کیا کہ ان کا قانونی اتحاد تو "ناقابل تقسیم” ہے ، لیکن ان کا کہنا تھا کہ وہ اپنے ازدواجی رشتے کو ختم کرنے  کے معاہدے پر پہنچ چکے ہیں، ان کی طلاق سے ان کی ترقی کی نئی راہیں کھلیں گی، مسٹر گیٹس دنیا کے امیر ترین افراد کی فوربس لسٹ میں چوتھے نمبر پر ہیں ، ان کا موجودہ بینک بیلنس$ 124 ارب ڈالر ہے ۔

بل گیٹس مشہور زمانہ  مائیکروسافٹ کمپنی کے بانی ہیں ،بل گیٹس اور ملینڈا نے اپنی طلاق کی خبر ٹوئیٹر کے ذریعے دی۔

کنگ کاؤنٹی سپیریئر کورٹ میں دائر ان کی مالی تقسیم  کی تفصیلات ابھی تک واضح نہیں ہیں، وہ مشترکہ اثاثوں کی تقسیم کے خواہاں ہیں ، علیحدگی کے معاہدے کے مطابق جس تک وہ پہنچ چکے ہیں ۔

چونکہ امریکہ ان چند نام نہاد "کمیونٹی پراپرٹی” قوانین کی حامل ریاستوں میں سے ایک ہے ، جن کا خیال ہے کہ شادی کے دوران حاصل کی گئی زیادہ تر جائیداد مشترکہ طور پر میاں بیوی کی ہوتی ہے اور طلاق میں برابر تقسیم ہوتی ہے۔

میاں بیوی بھی اس بات پر متفق ہوسکتے ہیں کہ کچھ اثاثے علیحدہ جائیداد ہیں ، یعنی ان کا تعلق ان میں سے ایک سے ہے،وراثت میں اکثر اس زمرے میں آتا ہے۔

Back to top button