سعودیہ میں پاکستانی سفیر کو جلد واپس بلا لینگے

نیوز اسلام آباد : پاکستانی لیفٹیننٹ جنرل (ر) بلال اکبر کو 7 ماہ قبل ہی سعودی عرب میں پاکستانی سفیر لگائے جانے کے بعد اب وزیراعظم عمران خان انہیں واپس بلانے پر بھی غور کر رہے ہیں ۔

یہاں وزارت خارجہ کے ترجمان سے جب اس معاملے پر چند روز قبل سوال کیا گیا تھا تو انہوں نے لاعلمی کا اظہار کیا تھا ۔

اور بلال اکبر نے بھی اسے افواہ کہا تھا ۔ 15؍ اکتوبر کو دی نیوز نے جب اُن سے رابطہ کیا تو انہوں نے کہا، ’موجودہ حالات کے تناظر میں شاید کچھ افواہیں زیر گردش ہیں ۔

مگر معلوم ہوا ہے کہ ریاض میں اُن کے متبادل کا نام بھی طے کرلیا گیا ہے اور اعلان جلد ہی متوقع ہے ۔ بلال اکبر کو واپس بلانے کی اصل وجہ معلوم نہیں لیکن غیر مصدقہ ذرائع سے پتہ چلتا ہے کہ انہیں چیئرمین نیب لگانے پر غور کیا جا رہا ہے ۔

جبکہ موجودہ چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال فی الحال عہدے میں توسیع لیے ہوئے ہیں اور ان کے عہدے کی مدت 8؍ اکتوبر کو ختم ہونے کے بعد صدر عارف علوی نے اُن کے عہدے کی مدت مکمل ہونے سے ایک دن قبل ہی آرڈیننس جاری کرکے جاوید اقبال کو عہدے میں توسیع دی ہے ۔

اپوزیشن لیڈر

اس کیلئے اپوزیشن لیڈر سے کوئی مشاورت نہیں کی گئی اور یہ بھی ایک الگ سوال بنا ہوا ہے ۔

اس کے علاوہ حالیہ عرصہ کے دوران بلال وہ دوسرے سفیر ہیں جنہیں عہدے کی مدت مکمل ہونے سے قبل ہی واپس بلایا جا رہا ہے ۔

اُن سے قبل راجہ علی اعجاز کو ان کی ریٹائرمنٹ سے چند ہفتے قبل ہی معطل کرکے قلیل مدتی نوٹس پر واپس طلب کرلیا گیا تھا ۔

جناب وزیراعظم نے اُن سے ملاقات میں ناراضی کا اظہار کیا تھا اور اس بات کا ذکر روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹس کے ایک ایونٹ میں کیا تھا ۔ علاوہ ازیں، ڈپلومیٹک، کمیونٹی ویلفیئر اور قونصلر ونگ کے 6؍ دیگر افسران کو بھی واپس بلایا جا چکا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button