بلوچستان حکومت اور اپوزیشن معاملات طے نہ پاسکے

کوئٹہ کے بجلی گھر تھانے میں  بلوچستان اسمبلی کی اپوزیشن جماعتوں  کی مشترکہ نیوز کانفرنس ہوئی جس میں قائد حزب اختلاف ملک سکندر بولے  کہ سات دن ہوگئے ہمیں گرفتار نہیں کیا جارہا، حکومتی نمائندوں کو اب ہمارے پاس آنے کی ضرورت نہیں۔

انہوں نے  کہا کہ بلوچستان حکومت نے اپوزیشن ارکان پر بکتر بند گاڑی سے حملہ کیا،بوگس اور  فراڈ ایف آئی آر ہم پر دباؤ ڈالنے کے لیے درج کرائی گئی۔

کوئٹہ کے تھانے میں موجود   اپوزیشن   کے ارکان نے  اعلان کردیا کہ  جام حکومت  جتنا چاہے ہم پر ظلم کرلے ہم اسے پورے  بلوچستان میں جام کر کے رہیں گے۔

اپوزیشن نے وزیر اعلی جام کمال سے معافی کا مطالبہ کیا اور ایف آئی آر کی واپسی تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان بھی کیا انہوں نے واضح کیا کہ وعدے کے باوجود مقدمے کی واپسی کا نوٹیفیکیشن جاری نہ ہونا اسمبلی کی توہین ہے۔

ترجمان صوبائی حکومت لیاقت شاہوانی کہتے ہیں  کہ اپوزیشن کے خلاف قانون کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی،کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دیں گے اور  قانون شکنی پر کاروائی ہوگی ،انہوں نے بتایا کہ ہم مذاکرات پر یقین رکھتے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button