آئی سی سی کے لیے بڑا سوالیہ نشان

آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ اکتوبر نومبر میں متوقع طور پر بھارت میں کھیلا جانا ہے تاہم اب بھارت میں کورونا وبا کی تشویشناک ناک ہوتی صورتحال کے باعث آئی سی سی (انٹر نیشنل کرکٹ کونسل) کی تشویش میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے، اور آئی سی سی کا بھارت میں ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کا انعقاد ایک سوالیہ نشان بن گیا ہے۔

بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ انڈیا (بی سی سی آئی) نے ٹی 20 ورلڈ کپ کے لئے نو مقامات کو شارٹ لسٹ کر لیا ہے،بی سی سی آئی کی اعلی کونسل نے اس ہفتے کے شروع میں چنئی ، بنگلورو ، حیدرآباد ، دہلی ، دھرمسالہ ، لکھنؤ ، کولکتہ ، احمد آباد اور ممبئی کو اس ایونٹ کے انعقاد کے لئے شارٹ لسٹ کیا تھا ، اور احمد آباد کو فائنل کی میزبانی کرنے کی تجویز دی گئی تھی۔

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ سے پہلے ایونٹ کے انعقاد کے لیے آئی سی سی مکمل تسلی کرنا چاہتا ہے کیونکہ آئی سی سی کے گورنر آف بورڈزکا ماننا ہے کہ ٹیموں اور  براڈ کاسٹرز سمیت دیگر ایونٹ سے متعلقہ دیگرافراد کی صحت کی حفاظت کو خطرے میں نہیں ڈالا جا سکتا۔

کوویڈ ۔19 کے کیسز میں اضافے نے متعدد ریاستوں کو لاک ڈاؤن نافذ کرنے پر مجبور کیا ہے ، آئی سی سی کے ایک ایونٹ اور لاجسٹک ٹیم کچھ مقامات پر صورتحال کا جائزہ کرنے کے لئے اپریل کے آخر میں ہندوستان کا سفر کرنے والی ہیں، تاہم ، مہلک وبا کی موجودہ لہر اس دورے کو ملتوی کر سکتی ہے،بھارت میں اس وقت وبائی حالت کی شدت کو دیکھتے ہوئے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے انسپیکشن وفد نے بھی ہندوستان کا سفر کرنے پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

بی سی سی آئی کے جاری بیان کے مطابق اگر آئی سی سی کی ٹیم اپنے منصوبے کو موخر کرتی ہے تو بھی اسے "تشویش کا سبب” نہیں سمجھا جانا چاہئے کیونکہ "بی سی سی آئی کو امید ہے کہ جون میں ہونے والی آئی سی سی کی سالانہ کانفرنس تمام شکوک و شبہات کو مٹا دے گی”۔

Back to top button