تاجروں کے آگے سندھ حکومت کی ہار

سندھ حکومت نے کراچی کے تاجروں کو پیر سے کاروباری اوقات میں نرمی کی یقین دہانی کرادی ہے، دکانیں کھولنے کے اوقات میں اضافہ کیے جانے کی امید ہے ساتھ ساتھ ریسٹورینٹس اور شادی ہالوں سے متعلق بھی مثبت پیش رفت کی توقع ہے۔

آج سندھ حکومت اور تاجروں کے درمیان کمشنر ہاوس میں مذاکرات ہوئے جس میں سندھ حکومت نے تاجروں کو پیر سے ریلیف دینے کی یقین دہانی کرادی ہے۔

 مذاکرات میں سندھ حکومت کے ترجمان سید ناصر حسین شاہ کا کہنا تھا کہ جو تاجر برادری کی طرف سے آج اعلانات کیے گئے تھے تو اس بارے میں ہم نے ان سے اپیل کی ہے کہ اس کو موخر کردیں  ۔

انہوں نے مزید کہا کہ پیر والے دن انشاءاللہ بہت سے مطالبات مان لیے جائیں گے اور تاجروں کو کافی بہتر سہولیات دی جائیں گی۔

سندھ حکومت نے تاجروں کو انتظامیہ کی جانب سے زیادتیاں نہ کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی اور ناصر حسین شاہ نے کراچی میں پولیس اور انتظامیہ کی جانب سے کی گئی زیادتیوں پر معافی بھی مانگی۔

تاجروں سےمعذرت

ناصر حسین شاہ نے کہا کہ اگر ہم یہاں پر کوئی اقدامات کر رہے ہیں تو اپنے لوگوں کو بچانے کے لیے کر رہے ہیں ،لیکن اگر کہیں پر کسی کی بھی طرف سے  زیادتی کی گئی ہے ،انتظامیہ کی طرف سے  تو ہم  تاجروں سےمعذرت کرتے ہیں ۔

تاہم  سندھ حکومت کی جانب سے آج کے دن حکومتی اوقات پر کاربند رہنے کی اپیل کے باوجود کچھ تاجر تنظیموں نے یہ موقف اختیار کیا کہ وہ آج دکانیں 8 بجے تک کھولنے کا اعلان کرچکے ہیں ،وہ تصادم نہیں چاہتے اس لیے کوشش کریں گے کہ  8 بجے سے کچھ پہلے ہی دکانیں بند کردیں۔

تاجر رہنماؤں کا کہنا تھا کہ چونکہ آج ہم آٹھ بجے تک مارکیٹیں کھولنے کا اعلان کر چکے تھے لہذا اس فیصلے کومعطل کرنا ممکن نہیں تاہم , ہم تصادم نہیں کریں گے اور  اپنے تاجروں سے کہیں گے کہ وہ 8  بجے سے قدرے قبل دکانیں بند کردیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button