سندھ تنخواہوں میں بیس فیصد اضافے کی منظوری

سندھ حکومت آئندہ مالی سال کا بجٹ آج کراچی میں صوبائی اسمبلی میں پیش کرے گی۔ وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ ایوان میں بجٹ پیش کریں گے۔

حکومت سندھ کے ترجمان مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ سندھ کابینہ نے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 20 فیصد اضافے کی منظوری دے دی ہے اور کم سے کم اجرت 25،000 روپے مقرر کی ہے ۔

کراچی : حکومت سندھ مالی سال 2021-22 کے بجٹ کا آج (منگل) کو اعلان کرے گی ۔ توقع ہے کہ سندھ کے بجٹ کا مجموعی حجم ایک ارب چالیس کھرب روپے سے زیادہ ہوگا ۔

سندھ کے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا جائے گا ، جبکہ امن و امان کے لئے 105 ارب روپے ، صحت کے لئے 172 ارب ، اسکول تعلیم کے لئے 215 ارب روپے اور کالج کی تعلیم کے لئے 25 ارب روپے تجویز کیے گئے ہیں ۔

تجویز ہے کہ محکمہ آبپاشی کے لئے 14 ارب روپے نقل و حمل ، بلدیاتی اداروں کے لئے 75 ارب روپے اور محکمہ آبپاشی کے لئے 353 ارب روپے مختص کیے جائیں گے ۔

سندھ حکومت کے ترجمان مرتضی وہاب نے ٹویٹر پر لکھا ہے کہ سندھ کابینہ نے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 20 فیصد اضافے کی منظوری دی ہے اور صوبے میں کم سے کم اجرت 25،000 روپے مقرر کی ہے ۔

انہوں نے یہ بھی تصدیق کی کہ سندھ کے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لایا جارہا ہے۔

وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ ، جن کے پاس وزیر خزانہ کا قلمدان بھی ہے ، سندھ اسمبلی میں بجٹ کی تجاویز پیش کریں گے ۔ سندھ اسمبلی کا بجٹ اجلاس سہ پہر تین بجے طلب کیا گیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button