شاہ محمود قریشی کی فلسطین حمایتی مہم

مظلوم فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے قومی  اسمبلی کا خصوصی اجلاس گزشتہ روز ہوا جس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اعوان  میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو اور پارلیمان کو یقین دلاتے ہیں کہ حکومت  مسئلہ کشمیر اور فلسطین پر کبھی آنچ نہیں آنے دے گی ،یہ ہمارا قوم سے وعدہ ہے۔

انہوں نے مطلع کیا کہ سلامتی کونسل اور او آئی سی میں پاکستان نے واضح  موقف  دیا دوسری طرف امریکا نے سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں رکاوٹ ڈالی۔

انہوں نے ارادے کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ  ترکی سے مزاکرات کر کے فیصلہ کیا کہ او آئی سی کے پلیٹ فارم سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا  ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ کریں گے کیونکہ سلامتی کونسل کو تو ویٹو کیا جاسکتا ہے لیکن اقوام متحدہ کے اجلاس کو ویٹو نہیں کیا جاسکتا۔

دورہ ترکی

 شاہ محمود نے بتایا کہ میں ترکی روانہ ہورہا ہوں سوڈان  اور فلسطین کے وزراء خارجہ بھی آرہے ہیں ،ہم چاروں وزراء سلامتی کونسل اور او آئی سی کی صورتحال پر تبادلہ خیال کر کے  نیو یارک جائیں گے اور وہاں پاکستان کی 22 کروڑ عوام کی ترجمانی کریں گے۔

وزیر اعظم کےفلسطین  کے معاملے  سے متعلق اقدامات کی تعریف کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیر اعظم اس معاملے میں زرہ برابر وقت ضائع کیے بغیر فوری اقدامات کے لیے فرنٹ فٹ پر  قیادت کر رہے ہیں۔

مزید کہا کہ تاریخ اس بات کی گواہ رہے گی کہ  انشاءاللہ پاکستان وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں    مظالم روکنے کی  جنگ میں صحیح جانب کھڑا تھا۔

واضح رہے کہ اطلاعات کے مطابق پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی   وزیر اعظم کی خصوصی ہدایت پر فلسطین میں جاری اسرائیلی جارحیت کے خلاف عالمی برادری کو  بیدار کرنے کا مشن لے کر  ترکی پہنچ چکے ہیں جہاں سے وہ ترکی ،سوڈان اور فلسطین کے وزراء خارجہ کے ہمراہ نیو یارک روانہ ہو نگے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button