انگلینڈ ٹیم کے سات ارکان کورونا کا شکار

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی) نے (آج)منگل کو بیان جاری کیا ہے کہ پاک  انگلینڈ سیریز میں   شامل انگلینڈ مینز ون ڈے انٹرنیشنل (ون ڈے)اسکواڈ  کے سات ارکان کی کوویڈ 19 کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے۔

 اسکواڈ کے دیگر ممبران کو بھی جانچا جا رہا ہے۔ کورونامثبت آنے والوں میں تین کھلاڑی اور ٹیم مینجمنٹ اسٹاف کے چار ممبرز شامل ہیں۔

کل (پیر) کو برسٹل میں منعقدہ پی سی آر ٹیسٹ کے بعد  انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی)  نے اس بات کی تصدیق  کی کہ انگلینڈ مینز ون ڈے ٹیم کے سات ممبروں – تین کھلاڑیوں اور چار مینجمنٹ ٹیم کے ممبران میں  کوویڈ 19 پازیٹو آیا ہے۔

پبلک ہیلتھ انگلینڈ ، پبلک ہیلتھ ویلز اور برسٹل لوکل ہیلتھ اتھارٹی کے اشتراک سے متاثرہ افراد اب 4 جولائی سے برطانیہ کی حکومت کے  قرنطینہ پروٹوکول کے تحت  آئیسولیشن میں رہیں گے۔

بائیو سیکیور ببل

اسکواڈ کے باقی ممبروں کو بھی ان افراد کے ساتھ قریبی رابطے رہنے کی وجہ سے  بائیو سیکیور ببل میں مزید پروٹوکولز کا سامنا کرنا پڑے گا۔

انگلینڈ بمقابلہ پاکستان ون ڈے سیریز کاپہلا ون ڈے آٹھ جولائی کو کارڈف میں کھیلا جانا ہے۔ ای سی بی نے تصدیق کی  ہے کہ پاک انگلینڈ  سیریز شیڈول کے مطابق ہوگی اور کپتان این مورگن کی جگہ بین اسٹوکس اب ون ڈے ٹیم کی قیادت کرنے کے لئے ٹیم میں واپس آئیں گے  ۔

انگلش کرکٹ  بورڈ "اگلے چند گھنٹوں” میں پاک انگلینڈ ون ڈے سیریز کے لئےکھلاڑیوں کے نام کا اعلان  کرے  گا۔

انگلینڈ کے وزیر صحت ساجد جاوید   نے بھی ایک بیان میں کہا ہے کہ  جولائی اور اگست میں انگلینڈ میں کورونا مثبت کیسز کی شرح میں  اضافے کا  خدشہ ہے۔

اس بیان کے پیش نظر جو ای سی بی نے شائقین کو اسٹیڈیم میں آنے کی اجازت دی تھی اس پر بھی نظر ثانی کی جاسکتی ہے، پہلے ون ڈے میں 25 سے 30 فیصد کراؤڈ کی اجازت دی گئی تھی جبکہ لارڈز میں ہونے والے دوسرے  ون ڈے میں 100 فیصد کراؤڈ کی اجازت دی گئی تھی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button