جوہر ٹاؤن حملے میں "را” کا ہاتھ

وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کی آئی جی انعام غنی کے ساتھ پریس کانفرنس میں جوہر ٹاؤن دھماکے میں ملوث پورے کے پورے گینگ کو گرفتار  کرنے  کا دعوی    کیا گیاہے۔

وزیر اعلی عثمان بزدار نے بتایا کہ دھماکے میں ملک دشمن خفیہ ایجنسی  براہ راست ملوث نکلی ،انہوں نے بتایا کہ دھماکے میں ملوث ملکی اور بین الاقوامی کرداروں کی شناخت ہوگئی ہے ،پولیس نے ملک بھر سے 4 دن میں تمام ملزمان پکڑ لیے ہیں۔

عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ دہشتگرد تنظیموں نے مقامی نیٹ ورک سے مل کر منصوبہ  بنایا تھا،انہوں نے کہا کہ میں پنجاب پولیس ،قانون نافذ کرنے والے ادارے،سی ٹی ڈی  اور تمام ایجنسیز کو شاباش دیتا ہوں اور مبارکباد دیتا ہوں۔

آئی جی انعام غنی نے بتایا کہ گاڑی میں بارود بھر کر لانے والا بھی گرفتار کرلیا گیا ہے،ملزم کا تعلق کے پی سے ہے لیکن پیدائش لاہور کی ہے،کسی بھی پنجابی سے بہتر پنجابی بولتا ہے ،اس نےدشمن خفیہ ایجنسی سے متعلق معلومات وفاق کو دے دی ہے۔

انعام غنی نے انکشاف کیا کہ جوہر ٹاؤن دھماکے کا  ہدف شہید ہونے والے افراد یا یہ جگہ نہیں تھی جہاں دھماکہ کیا گیا بلکہ  اس کاروائی کا مقصد فیٹف کانفرنس میں پاکستان کو بدنام کرنا تھا۔

سازش بھارتی خفیہ ایجنسی نے تیار کی اوردہشتگردی کے لیے بھارت سے ایک خلیجی ممالک میں رابطے کیے گئے جبکہ تخریب کاری میں پاکستانی جرائم پیشہ عناصر شامل ہوئے۔

دہشتگردی میں خلیجی ریاست میں مقیم  دو پاکستانی خاندان ملوث نکلے،”را”خلیجی  ریاست میں مقیم افراد سے رابطے میں رہا،دونوں سہولت کار خاندانوں کے بھارتی شہر  ممبئی میں رابطے ہیں،ممبئی سے تمام روابط اور اکاؤنٹس ٹریس کرلیے گئے ہیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button