را کے دہشتگرد میرپورخاص سے گرفتار

کاؤنٹر ٹیررزم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) نے میر پور خاص سے ایم کیو ایم لندن کے دو دہشتگرد گرفتار کرلیے ہیں ،ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمر شاہد کا کہنا ہے کہ گرفتار ملزمان نے 1998 سے 2002 کے دوران  بھارت جاکر را سے دہشتگردی کی عسکری تربیت حاصل کی تھی۔

عمر شاہد حامد کا یہ بھی کہنا تھا کہ دہشتگردوں کی را سے تربیت کا نیٹ ورک  ایم کیو ایم کے رہنما انیس ایڈووکیٹ اور واسع جلیل چلاتے تھے ، انیس ایڈووکیٹ کو گرفتار نہ کرنے کے سوال پر ڈی آئی جی سی ٹی ڈی کا کہنا تھا کہ یہ تفتیشی افسر کا استحقاق ہے  کہ کسے کب گرفتار کرنا ہے ۔

نیوز کانفرنس کے دوران گرفتار دہشتگردوں سے برآمد اسلحے کی تفصیل بھی فراہم کی گئی، سی ٹی ڈی کے مطابق میر پور خاص سے گرفتار دونوں دہشتگرد  ایم کیو ایم لندن کی اسی ٹارگٹ کلنگ ٹیم  کا حصہ ہیں جس کے تین ارکان کو ماہ رمضان میں  لانڈھی ریلوے اسٹیشن سے گرفتار کیا گیا تھا ۔

ایم کیو ایم کے رہنماؤں کا ہاتھ

جن میں سے ایک گرفتار دہشتگرد نعیم نے انکشاف کیا تھا کہ انہیں را تک رسائی دلوانے میں ایم کیو ایم کے رہنماؤں کا ہاتھ تھا ،اسکا کہنا تھا کہ انڈیا جانے کی تو کوئی سوچ ہی نہیں تھی تاہم انیس ایڈووکیٹ کے گھر کوئی مرکزی کمیٹی آئی ہوئی تھی تو میرے پاس زون سے ایک کارکن آیا، مجھے اندر بلایا گیا اس ٹائم پر واسع جلیل بیٹھے ہوئے تھے اور انکے ساتھ  کوئی اور (ممکنہ طور پر انیس ایڈووکیٹ) بھی تھے ۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی کا مزید کہنا تھا کہ اے پی ایم ایس او کے صدر محمود صدیقی ابھی بھی ہندوستان میں ہیں ، جو بانی ایم کیو ایم اور را کے مابین رابطے کے انچارج ہیں۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمر شاہد نے یہ بھی کہا کہ اس گروپ میں 6 ملزمان تھے ، جن میں سے 5 کو گرفتار کیا گیا ہے ، تربیت کے لئے ہندوستان جانے والے لوگوں کی تعداد کافی زیادہ ہے ، 3 ہفتہ قبل 3 دہشت گرد مارے گئے تھےجنہیں حیدرآباد سے گرفتار کیا گیا تھا جبکہ دو افراد کو گذشتہ روز میرپور خاص سے بھی گرفتار کیا گیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button