تحریک انصاف کے رکن اسمبلی کا دکاندار سے جھگڑا

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے وفاقی قانون ساز اسلم خان گزشتہ روز صدر کے علاقے میں واقع زم زم مال کی ایک موبائل شاپ پر مسلح افراد کے ہمراہ پہنچے اور موبائل کے معاملے پر عملے کے ساتھ لڑ پڑے جب کہ ان کے محافظین نے دکان کے عملے پر بندوق تان لی۔

دکان سے حاصل کی گئی سی سی ٹی وی فوٹیج میں مرئی اور مبینہ طور پر ایم این اے دکان میں گھس گئےاور اس کے بعد دکان کے عملے پر جسمانی حملہ ہوا۔ موبائل مارکیٹ انتظامیہ نے بتایا کہ وفاقی حکمران جماعت سے تعلق رکھنے والے ممبر نیشنل اسمبلی (ایم این اے) نے اپنے دوستوں اور سیکیورٹی گارڈز کے ساتھ مل کر موبائل فون شاپ کے عملے کو مبینہ طور پر ایک زبردست تکرار کے بعد پیٹا۔

سی سی ٹی وی میں ایم این اے کے افراد مزید ایک دکاندار کو اپنے ساتھ گھسیٹتے ہوئے دکھائے دیتے ہیں جبکہ مارکیٹ ایسوسی ایشن کا دعویٰ ہے کہ اسلم خان  نے نہ صرف ہنگامہ آرائی شروع کردی تھی اورعملے پر حملہ کیا بلکہ ایم این اے نے پولیس کو جائے وقوعہ پر بلا کر مقدمہ بھی از خود درج کروایا جسکے نتیجے میں پولیس  نے دکان کے عملے کو لاک اپ میں بند کردیا۔

پریڈی پولیس اسٹیشن جس کی حدود میں واقعہ پیش آیا نے واقعے کی تصدیق کی اور بتایا کہ دونوں فریق اسٹیشن پر موجود ہیں جو پولیس کو اپنے بیانات فراہم کر رہے ہیں، پولیس نے مزیدبتایا کہ ہم اس معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں اور تفتیش جاری ہے۔

تاہم  رات تک ڈی آئی جی ساؤتھ کے دفتر میں ایم این اے اور دکان کے عملے میں مزاکرات کے بعد صلح ہوگئی، مذاکرات میں اسلم خان ارم چیمہ اور ایم پی اے راجہ اظہر شریک ہوئے۔ راجہ اظہر کے مظابق ایس ایس پی ساؤتھ نے معاملہ رفع دفع کرادیا۔

Back to top button