پاکستانی بھی اس سال حج کریں گے

کورونا وبا کے دوران  پہلی بار سعودی حکومت نے پوری دنیا سے 60 ہزار افراد کو حج کی اجازت دے دی ہے،پاکستان سمیت دنیا بھر سے  60 ہزار افراد  اس سال حج ادا کرنے حجاز مقدس جاسکیں گے۔

سعودی حکومت کی جانب سے تمام ممالک کا حاجیوں کا کوٹہ مقرر  کیا جارہا ہے ، اور تمام تر ممالک کے  حکام اس سلسلے میں  سعودی حکومت سے رابطے میں ہے۔

جیسے ہی پاکستانی وزارت مذہبی امور کو سعودی حکومت  کی طرف سے حاجیوں کی تعداد اور دیگر تفصیلات سے آگاہ کردیا جائے گا ویسے ہی  پاکستان کی  وفاقی مذہبی امور کی وزارت کی جانب سے متوقع طور پر  رواں ہفتے پاکستان  کے  حج انتظامات کے بارے میں بریفنگ  جاری کردی جائے گی۔

کورونا وبا سے پہلے لاکھوں فرزند اسلام حج کا فریضہ ادا کرتے تھے  لیکن کورونا وبا کے بعد جہاں  دنیا بھر میں زندگی محدود ہوگئی وہیں مسلمانوں کی فرض عبادت حج کی ادائیگی میں بھی  رکاوٹیں پیدا ہوگئیں۔

حج پالیسی برائے پاکستان

پچھلے سال بھی کورونا کی وجہ سے حج متاثر ہوا تھا تاہم اس سال سعودی حکام نے محدود تعداد میں حاجیوں کی درخواستیں منظور کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سعودی حکومت کے پاکستان میں لگائی جانے والی چائینیز ویکسینس   سے متعلق تحفظات ہیں  جبکہ  ان دونوں ویکسینز کو عالمی ادارہ صحت نے بھی منظوری دے دی ہے اور ایک ویکسین کے لگانے کے بعد   عالمی ماہرین صحت کے مطابق دوسری ویکسین لگانا  درست نہیں ہے۔

پاکستانی  حکام کی طرف سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ اگر سعودی حکومت  آسٹرا  زینیکا اور پی فائزر ویکسینز کی شرط بھی رکھتی ہے تو پاکستان کے پاس ان ویکسینز کی بھی بڑی تعداد موجود اور رواں ماہ  ان دونوں ویکسینس کی ایک بڑی کنسائمنٹ بھی آنے والی ہے ۔

وزیر اعظم کے نمائندہ خصوصی برائے مذہبی ہم آہنگی  و مشرق وسطیٰ، حافظ طاہر محمود اشرفی کا اس بارے میں کہنا ہے کہ  ہماری سعودی حکام سے بات چیت جاری ہے اور ہمیں قوی امید ہے کہ سعودی  حکام کو پاکستان میں لگائی جانے والی  چائینیزویکسینز کے بارے میں جو تحفظات ہیں  وہ جلد دور ہوجائیں گے اور ہمیں جلد کوٹہ الاٹ کردیا جائے گا جسکے بعد محترم نورالحق قادری  حج سے متعلق دیگر فیصلے کریں گے  جن میں پچھلے سال کی حج درخواستوں   پر نطر ثانی سے متعلق فیصلہ بھی شامل ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button