پاکستان کی بھارت کے ساتھ ہمدردی

ہفتہ کے روز بھارت میں کوویڈ 19 میں تازہ ترین 3.46 لاکھ سے زیادہ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جو اب تک کے سب سے زیادہ ایک روزہ تعداد ہے۔ بھارت میں کورونا سے متاثرہ افراد کی کل تعداد 1.66 کروڑ ہے، فعال کیسز کی تعداد 25،52،940 ہے جبکہ 2،19،838 افراد وائرس کے انفیکشن سے صحتیاب بھی ہوئے ہیں ۔

ایسے مشکل وقت میں جہاں ہندوستان کو آکسیجن ، ویکسین اور تمام خام مال کی کمی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ، ہمسایہ ممالک نے ہندوستان کو مدد فراہم کرنے کی پیش کش کی ہے۔ 23 اپریل کو ہندوستان نیڈآکسیجن ہیش ٹیگ نے پاکستان میں ٹوئیٹر پر ٹرینڈ کا آغاز کیا اس کے بعد پاکستانی شہریوں نے وزیر اعظم عمران خان سے بھارت کو مدد کی پیش کش کی درخواست کرنا شروع کی، جب سے اب تک یہ ہیش ٹیگ پاکستانی اسٹینڈس ودھ انڈیا ٹوئیٹر پر بھارت اور پاکستان میں ٹرینڈ کررہا ہے۔

جب ہندوستان ہزاروں انفکشن اور اموات ، آکسیجن اور ادویات کی قلت کے ساتھ ایک وبائی بیماری کے بیچ میں پھنس گیا ہے تو ہمسایہ ملک پاکستان نے امید اور حمایت کے پیغامات کے ذریعہ بھارت کے ساتھ پوری دلی یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے ٹوئیٹر پر لکھا کہ میں کوویڈ 19 کی مہلک ترین لہر کا سامنا کرنے والے ہندوستانی عوام سے یکجہتی کا اظہار کرنا چاہتا ہوں ،ہم اپنے ہمسایوں سمیت دنیا بھر میں وبا کی زد میں آنے والے افراد کی صحتیابی کے لیے دعا گو ہیں ،انسانیت پر حملہ آور اس آفت کا ہمیں مل کر مقابلہ کرنا چاہیے۔

چونکہ بھارت میں روزانہ تین لاکھ سے زیادہ نئے کیسز ریکارڈ ہوتے رہتے ہیں ، بہت سے لوگوں نے حمایت کے پیغامات پر شکرگزاری کے ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

Back to top button