بدترین آب و ہوا میں پاکستان کا پانچواں نمبر

اسلام آباد : اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ پاکستان اب دنیا کی بدترین آب و ہوا سے متاثرہ ممالک میں پانچویں نمبر پر ہے جو کہ پوری قوم کے لیے گہری تشویش کا باعث ہے کیونکہ موسمیاتی تبدیلی ترقی پذیر ممالک کے تمام سماجی و اقتصادی شعبوں کو شدید متاثر کر رہی ہے ۔

انہوں نے یہ بات جمعرات کو پارلیمنٹ ہاؤس میں قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے موسمیاتی تبدیلی کے زیر اہتمام آئندہ 26 ویں اقوام متحدہ موسمیاتی تبدیلی کانفرنس آف پارٹیز کی تیاری کے لیے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔

سپیکر نے کہا کہ پاکستان کی پارلیمنٹ موسمیاتی تبدیلی کے منفی اثرات سے پوری طرح آگاہ ہے اور کلین اینڈ گرین پاکستان کے موجودہ حکومت کے اقدامات کی نگرانی کرے گی جس کا مقصد ان اثرات کو ختم کرنا ہے ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ شجرکاری کی جاری مہم ماحول پر مثبت اثرات مرتب کرے گی ۔

سپیکر نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ عام لوگوں کی نمائندہ ہونے کے ناطے عام لوگوں کو درپیش مسائل سے نمٹنے کے لیے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے ۔ انکا کہنا تھا کہ موجودہ اسمبلی نے عوام کے بہترین مفاد میں قانون سازی کی ہے اور اب تک 94 بل منظور کئے گئے ہیں جن میں 16 پرائیویٹ ممبر بل اور 200 سے زائد پرائیویٹ ممبر بلز اسٹینڈنگ کمیٹیوں میں زیر غور ہیں ۔

سابقہ ​​فاٹا کی ترقی

اسد قیصر نے کہا کہ سابقہ ​​فاٹا کی ترقی اور پیش رفت کے حوالے سے خصوصی کمیٹی دیرینہ فاٹا کے بہادر عوام کو درپیش تمام کوتاہیوں کو دور کرنے میں اہم کردار ادا کرے گی ۔

جناب اسپیکر نے یہ بھی کہا کہ خطے کو قومی دھارے میں لانے کے لیے تمام ذرائع اور وسائل مختص کیے جائیں گے ۔ اور موجودہ حکومت افغانستان کی صورت حال سے پوری طرح آگاہ ہے اور خاص طور پر بنیادی خوراک کی فراہمی میں افغان بھائیوں کی مدد کے لیے تیار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان افغانستان پارلیمانی فرینڈ شپ گروپ ضرورت کی اس گھڑی میں افغانی بھائیوں کو سہولت فراہم کرنے کی کوشش کرے گا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button