پاکستان کو ایک اور ایکشن پلان مل گیا

فیٹف نے پاکستان کو  اکتوبر تک مزید گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ کر لیا ہے ،فیٹف نے پاکستا ن کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے فیٹف ایکشن پلان کےتحت  17 قوانین پاس کیے  اور 27 میں سے 26 نکات پر مکمل عمل در آمد کیا،کالعدم تنظیموں کے ایک ہزار سے زائد اثاثہ جات تحویل میں لیے ۔

 تاہم  پاکستان کی کوششوں کی سراہنا کرنے کے ساتھ ساتھ  فیٹف  نے پاکستان سے  ڈو مور کا مطالبہ کرتے ہوئے مزید 6  نکات پر عمل درآمد کا بھی کہہ دیا۔

فرانس میں ہونے والے ورچوئل اجلاس میں اعتراف کیا گیا  کہ فروری 2021 سے اب تک 3  میں سے مزید 2 نکات پر عمل درآمد کیا گیا اور ساتھ ہی فیٹف نے مزید ٹاسک بھی سونپ دیا۔

صدر فیٹف مارکوس پلیئر  نے اب تک اُٹھائے جانے والے پاکستانی اقدامات پر  اطمینان کا اظہار کیا، ان کا کہنا تھا کہ میں حکومت پاکستان کے اس عزم کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں جسکے تحت انہوں نے اے پی جی رپورٹ آنے کے وقت سے نمایاں پیش رفت کی ہے۔

میں مطالبہ کرتا ہوں کہ پاکستان  کے حکام ضروری تبدیلیوں اور ایشوز کے حوالے سے کام جاری رکھیں ،پاکستان میں  اس وقت بھی منی لانڈرنگ کے حوالے سے خطرات موجود ہیں ۔

فیٹف نے ریئل اسٹیٹ  اور جیولرز سمیت غیر مالیاتی  شعبوں کی نگرانی بڑھانے پر زور دیا،مطالبہ کیا کہ منی لانڈرنگ اور ٹیرر فائنانسنگ  میں ملوث افراد کے خلاف  مقدمات اور سزاؤں میں تیزی لانا ہوگی۔

پیرس اجلاس

وزارت خزانہ کے مطابق پیرس اجلاس میں  فیٹف کے رکن ممالک نے پاکستان کی بے مثال کامیابیوں کا متفقہ طور پر اعتراف کیا۔

ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان کا باقی ایک نکتہ ابھی اکتوبر 2021 میں ہونے والے فیٹف ری پلین اجلاس سے قبل  مکمل کرلیا جائے گا، پاکستان پہلے ہی فیٹف کو اعلی سیاسی سطح پر یقین دہانی کراچکا ہے۔

وفاقی وزیر حماد اظہر کہتے ہیں کہ  آج فیٹف کے حوالے سے ہماری کوششوں کو سراہا جارہا ہے البتہ گرے لسٹ سے نکلنے کا ابھی کچھ سفر باقی ہے،پاکستان کا  بلیک لسٹ میں جانے کا کوئی خطرہ نہیں ہے،نہ ہی پاکستان پر کسی قسم کی پابندیاں لگائی گئی ہیں۔

ہماری نظر اب صرف اسی طرف ہے کہ ہم نے کیسے گرے سے وائٹ لسٹ میں جانا ہے،پاکستان کو سب سے مشکل 27 نکاتی پلین دیا گیاتھا جو ٹیررزم فائنانسنگ سے  متعلق تھا،پاکستان نے پہلے 26 نکات پلین پر  عمل کیا،ایک نکتہ باقی رہ گیا ہے جسے جلد پورا کرلیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو آج ایک نیا  6نکاتی ایکشن پلان  دیا گیا  ہے جو منی لانڈرنگ سے متعلق ہے،منی لانڈرنگ کے 6 نکاتی ایکشن پلان پر اگلے  12 ماہ میں عمل در آمد مکمل کرلیا جائے گا ۔

حماد اظہر نے  بھارت سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کا اصلی چہرہ فیٹف کے پلیٹ فارم پر بری طرح بے نقا ب ہوا ہے کیونکہ اس نے اپنا ڈرامہ اوور پلے کیا ہے اور اسکی چالوں میں اب دم نہیں رہا۔ فیٹف میں سب کو پتہ ہے کہ بھارت کا فیٹف میں ایک ہی مقصد  ہے کہ وہ پاکستان کو فیٹف میں پولیٹی سائز  (سیاسی  طور پر دھکیلے)  کرے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button