پاکستان اور ترکی لازم و ملزوم

صدر عارف علوی سے ترکی کی بری فوج کے کمانڈر نے ملاقات کی ،ایوان صدر اسلام آباد میں ملاقات کے دوران صدر عارف علوی نے کہا کہ پاکستان ترکی کے ساتھ تعاون مزید مستحکم کرنے کے لیے پر عزم ہے۔

 دونوں جانب سے تجارت،دفاع اور ثقافت کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کے وسیع مواقع  موجودہیں، انہوں نے دونوں ‘برادر’ ممالک کے باہمی مفادات کے لئے ترکی کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا۔

دوطرفہ تعلقات کی موجودہ  صورتحال پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے صدر نے کہا کہ دونوں ملکوں میں تربیتی تعاون معاہدے سے دفاعی تعاون مزید مستحکم ہوگا۔

انہوں نے اپنے ترک ہم منصب رجب طیب اردگان کی بھی تعریف کی کہ انہوں نے اپنے ملک کی معاشی خوشحالی اور دنیا بھر کی مسلم برادریوں میں اتحاد کو فروغ دینے میں بہترین کردار ادا کیا ہے۔

صدر عارف علوی نے مزید کہا کہ عالمی برادری مسئلہ  کشمیر کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔بھارت کے دہشتگردی کے لیےافغان سرزمین استعمال کرنے پر تشویش ہے۔لاہور میں حالیہ دہشتگردی کا واقعہ بھارت کی پشت پناہی سے ہوا۔

بھارت دہشتگردوں کی تربیت  اور مالی امداد سے خطے میں تخریب کاری کر رہا ہے۔بھارت میں یورینیم کی  خرید و فروخت پر عالمی برادری کی  خاموشی باعث تشویش ہے ۔

 قبل ازیں صدر نے اسلام آباد میں ایوان صدر میں خصوصی سرمایہ کاری کی تقریب میں جنرل دُندار کو ایوارڈ سے نوازا ،تقریب  میں نامور فوجی اور سرکاری شخصیات نے شرکت کی۔

ملاقات کے دوران ترک کمانڈر نے کہا کہ پاکستان اور ترکی لازم وملزوم،مشترکہ عقائد  اور اقدار کے حامل ہیں۔ترک عوام پاکستانیوں کو اپنا بھائی سمجھتے ہیں۔ ترک جنرل نے ایوارڈ پر صدر کا شکریہ بھی ادا کیا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button