پویلین اینڈ کلب فوری طور پرمسمار کرنے کا حکم

سپریم کورٹ نے پیر کو کراچی میں مقامی انتظامیہ کو حکم دیا کہ وہ گلشنِ اقبال کے تفریحی پارک میں موجود پویلین اینڈ کلب کو مسمار کردے اور تمام تجارتی سرگرمیاں ختم کرے ۔

چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں تین ججوں کے بنچ نے کیس کی سماعت کی اس کیس میں پارک کو پویلین اینڈ کلب میں تبدیل کردیا گیا ہے اور دیگر تجارتی سرگرمیوں کے ساتھ ساتھ ممبرشپ بھی پیش کی جارہی ہے ۔

انہوں نے کراچی کے ناظم کو ہدایت کی کہ وہ کلب کو فوری طور پر مسمار کردے اور پارک کے احاطے میں دیگر تجارتی سرگرمیاں ختم کرے اور دو دن کے اندر تعمیلی رپورٹ درج کرائے ۔

عدالت عظمی نے منتظمین سے مزید کہا کہ اس سے ملحقہ پلاٹ کے ساتھ ہی احاطہ تیار کیا جائے – جس پر سے حال ہی میں غیر قانونی تعمیر ہٹا دی گئی تھی۔

اس سے قبل ، عدالت عالیہ نے الہ دین پارک سے متصل زیر تعمیر رہائشی کمرشل ملٹی اسٹوری رائل پارک عمارت کو منہدم کرنے کا حکم بھی دیا تھا اور راشد منہاس روڈ پر واقع دو ایکڑ پلاٹ کے لیز کو غیر قانونی قرار دے دیا تھا ، زیر تعمیر عمارت کو منہدم کرنے کے لئے متعلقہ حکام کو حکم جاری کیا گیا ہے ۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے سرکاری مقامات پر غیر مجاز تعمیرات اور تجاوزات پر بھی حکومت سندھ پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button