اغوا نہیں ڈرامہ ہے، شیخ رشید

وزیر داخلہ شیخ رشید کہتے ہیں کہ افغان سفیر کی بیٹی کا اغواء نہیں کیا گیا  بلکہ وہ اپنی مرضی سے راولپنڈی گئی۔ یہ عالمی سازش اور "را "کا  ایجنڈا ہے ۔

میڈیا پر چلنے والی تصاویر اس لڑکی کی نہیں ہیں بلکہ جعلی ہیں ۔ سی سی ٹی وی فوٹیج دیکھی، دو ٹیکسیوں میں نہیں بلکہ  تین ٹیکسیوں میں لڑکی سوار ہوئی جبکہ اس نے دو  ٹیکسی بدلنے کا کہا تھا۔

لڑکی گھر سے پیدل نکلی، کھڈا مارکیٹ سے شاپنگ کی ، ایف سیون سے دامن کوہ گئی اور وہاں سے ایف نائن پارک گئی۔ لڑکی نے دامن کوہ سے تیسری ٹیکسی لی لیکن گھر نہیں گئی۔

دامن کوہ سے  اور ایف نائن پارک سےلڑکی نے انٹرنیٹ بھی استعمال کیا۔ لڑکی نے پہلے کہا کہ موبائل فون لے گئے اور پھر لڑکی نے موبائل فون دیا لیکن ڈیٹا ڈیلیٹ کر کے ۔

ٹیکسی میں تشدد

شیخ رشید کا یہ بھی کہنا ہے کہ لڑکی نے جو کہا تھا کہ دامن کوہ پر جس ٹیکسی میں لے جایا گیا اس میں تشدد کیا گیا ،تو اس ٹیکسی کا ڈرائیور ہمارے پاس ہے اور اس سے تفتیش کے دوران یہی بات سامنے آئی ہے کہ لڑکی جھوٹ بول رہی ہے اور ڈرائیور نے اسے  عام پسنجر کی طرح مطلوبہ جگہ چھوڑ دیا تھا۔

دامن کوہ سے جو ٹیکسی ایف نائن پارک لے کر گئی ہے اس کے ڈرائیور کو اس لڑکی نے 500 روپے بھی دیے ہیں۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ہم نے تمام صورتحال اور تفتیشی پیش رفت قوم کے سامنے رکھ دی ہے۔ ساری دنیا میں ہمیں سوشل میڈیا کہ ذریعے بدنام کیا جارہا ہے۔

یہ ساری چیزیں "را” کے ایک طے شدہ لائحہ عمل کے ساتھ ہورہی ہیں ۔ یہ سب "را” کی پاکستان کو بدنام کرنے کی سازش ہے۔ ہماری جے سی سی تھی تو انہوں نے داسو بس حملہ کردیا، فیٹف سمٹ تھا تو انہوں نے جوہر ٹاؤن کاواقعہ کردیا۔ اب ہماری افغان کانفرنس تھی تو انہوں نے یہ ڈرامہ رچا دیا  ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button