نواز شریف کی جائیداد کی نیلامی شروع

سابق وزیر اعظم  نواز شریف کی شیخوپورہ میں  88 کنال  4 مرلہ کی اراضی  کی نیلامی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

توشہ خانہ ریفرنس میں سابق وزیر اعظم  نواز شریف کی شیخوپورہ میں  88 کنال اراضی بحالی کے طور پر فروخت کی جارہی ہے۔

نیلامی کمیٹی کے سربراہ کہتے ہیں کہ  احتساب عدالت کے حکم پر نیلامی جاری ہے،بولی میں حصہ لینے والے زر ضمانت کمیٹی میں جمع کرادیں ،نیلامی شام 4 بجے تک جاری رہے گی۔

بولی شیخوپورہ کی ضلعی انتظامیہ کی میونسپل کمیٹی ہال   میں جاری ہے  ، اسلام آباد احتساب عدالت کے حکم پر  نیلامی سے حاصل ہونے والی رقم   سرکاری خزانے میں جمع ہوگی۔

نواز شریف کی جائیداد کے بارے میں ہر آدھے گھنٹے بعد اعلانات جاری ہیں ،خریداروں کی عدم دلچسپی  دیکھنے میں آرہی ہے،اب تک بولی میں دلچسپی لینے والے صرف ایک شخص  محمد بوٹانے 10 لاکھ روپے کا چیک زر ضمانت  کے طور پر جمع کرایاہے ، نیلامی 70 لاکھ روپے فی ایکڑ پر شروع ہوئی۔

نیلامی

زمین کی ملکیت اور قبضے کے دعوے دار شہری نیلامی میں پہنچ گئے، نیلامی پر اشرف ملک نامی شہری نے اعتراض کرتے ہوئے موقف دیا ہے کہ2019 میں یہ اراضی  ساڑھے 7 کروڑ میں نواز شریف سے  خرید کر قبضہ حاصل کیا تھا،نواز شریف پر بننے والے کیسز کی وجہ سے رجسٹری نہ ہوسکی اور فی الحال معاملہ سول عدالت میں زیر سماعت ہے ۔

ضلعی انتظامیہ نے درخواست گزار کو متعلقہ فورم سے رجوع کرنے کی ہدایت کی ہے،ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کسی کو نیلامی پر اعتراض ہے تو وہ نیب عدالت جاسکتا ہے۔

گذشتہ روز اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کی ان کی جائیدادوں کی نیلامی  کوروکنے کے لئے عدالت  میں دائر درخواستوں کو مسترد کردیا تھا۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس امیر فاروق اور جسٹس طارق محمود پر مشتمل بنچ نے معزول وزیر اعظم کی درخواستوں کو ناقابل سماعت قرار دے دیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button