متعدی بیماریوں سے نمٹنے کے اقدامات

سندھ میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کی پیش نظر اینٹی ایم این نے سندھ حکومت کو طبی آلات فراہم کردیے ہیں۔طبی آلات میں  دس ایکسرے مشینیں، 5سو  آکسیجن سلینڈرز ،25 آئی سی یو وینٹیلیٹرز اور 2 سو بائی پیپ وینٹیلیٹرز شامل ہیں۔

دوسری جانب گزشتہ روز اسلام آباد میں این آئی ایچ (نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ) کے تحت سینٹر فار ڈیزز کنٹرول پاکستان کا افتتاح کیا گیا۔

سی ڈی سی کے قیام کا اولین مقصد صوبائی اور وفاقی سطح پر ایک ساتھ ایک مربوط اور منظم طریقے سے کورونا جیسی  متعدی بیماریوں کے خلاف مقابلہ کرنے کی صلاحیت پیدا کرنا ہے۔

افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا تھا کہ  اس ادارے کا مقصد صرف متعدی امراض سے نمٹنا نہیں بلکہ کچھ ایسے امراض جو معاشرے میں سرایت کر جاتے ہیں اُن سے نمٹنے کی صلاحیت بھی قومی نظام صحت میں پیدا کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مستقل بنیاد پر پاکستان کی صحت عامہ کے حوالے  سے ایک ادارے کی ضرورت تھی جو بیماریوں  کے خاتمے کے ساتھ ساتھ جو عوام کی بڑی آبادی میں غذائیت کی کمی کا مسئلہ ہے اسے بھی سلجھائے۔

ڈاکٹر فیصل سلطان نے بتایا کے یہ ادارہ پاکستان میں نیوٹریشن (غذائیت) کے حوالے سے بھی اقدامات کرے گا  اور اس سے بیماریوں سے نمٹنے میں اہم مدد ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button