ملالہ کے بیان پر متھیرا اور وینا کی مخالفت

پاکستان کی نوبل امن انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی نے برطانوی  فیشن میگزین ووگ  کے جولائی کے شمارے میں جگہ بنائی اور ساتھ ساتھ عالمی شہرت یافتہ میگزین ووگ کی ویب سائٹ پر ملالہ کا انٹرویو بھی پبلش ہوا تھا ۔

انٹرویو میں آکسفورڈ یونیورسٹی سے گریجویشن کے بعد ، اس کے مستقبل ، محبت اور شادی کے لئے زندگی گزارنے کے منصوبوں کا احاطہ کیا گیا تھا۔

ملالہ یوسف زئی نے گزشتہ روز اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر برطانوی فیشن میگزین ووگ کے سرورق کی تصویر شیئر کی اور بتایا کہ ووگ میگزین نے آئندہ ماہ کے شمارے کے سرورق کے لیے ملالہ یوسف زئی کا انتخاب  کیا ہے۔

ووگ میگزین کی ویب سائٹ پر شائع ہونے والے انٹرویومیں انہوں نے اپنے بارے میں کئی باتیں کرتے ہوئے شادی کے حوالے سے اپنی سوچ کا اظہار بھی کیا۔

میگزین کے مطابق انٹرویو کے دوران ملالہ نے یہ کہتے ہوئے شادی کے ارادے کے بارے میں اپنے خدشات اٹھائے کہ ، "مجھے ابھی تک سمجھ نہیں آرہی ہے کہ لوگوں کو شادی کیوں کرنا ہے۔ اگر آپ اپنی زندگی میں کسی انسان کو چاہتے ہیں تو آپ کو شادی کے کاغذات پر دستخط کرنے کی کیا ضرورت ہے ، کیوں یہ چاہت صرف شراکت نہیں بن سکتی ہے؟

ملالہ کے اس بیان پر  سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث کا آغاز ہوگیا کچھ لوگوں کا خیال  تھا کہ یہ ملالہ کا ذاتی مسئلہ ہے اور کچھ کا کہنا تھا کہ ایک اتنے بڑے پلیٹ فارم پر شادی کی مخالفت کرنا ،بے حیائی اور زنا کو فروغ دینا ہے۔

ملالہ کی سوچ

تاہم سوشل میڈیا صارفین میں سے اکثر ملالہ کی سوچ کو غلط قرار دیتے ہیں کیونکہ ہر مذہب اور ہر معاشرے میں شادی کو ایک خاص مقام حاصل ہے  اور کچھ ممالک میں لِو اِن ریلیشن شپ کی اجازت ہونے کے باوجود اسے کلچر کے خلاف ہی سمجھا جاتا ہے۔

پاکستانی ماڈل اور ہوسٹ وینا ملک اور متھیرا نے  ملالہ کے شادی کے خلاف بیان پر سوشل میڈیا پر تبصرہ  کیا  اور اپنی رائے کا اظہار کیا ۔

متھیرا نے لکھا کہ’’ ووگ میگزین کے سرورق پر ملالہ کی تصویر  مجھے پسند آئی۔ ہمیں براہ کرم اس نسل کو شادی کرنے کی تعلیم دینی چاہئے اور اسکی بھی کہ نکاح کرنا سنت ہے یہ صرف کاغذات پر  ایک دستخط کرنا نہیں ،آپ کوئی پلاٹ نہیں خرید رہےبلکہ یہ آپکی نئی شروعات کو دعاؤں اور برکتوں کے ساتھ کرنا ہے۔

اس نے مزید لکھا  کہ زبردستی کی شادی غلط ہے ، شادی میں تشدد غلط ہے  اور کم عمری کی شادی  بھی غلط ہے لیکن خدا کی رحمت کے ساتھ نکاح کرنا  بہت اچھا ہے۔ تواگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ  کی اپنی زندگی میں کسی ساتھی  کا ہونا اچھا ہے تو اس چاہت کا  حلال طریقے سے  پورا ہونا بہترین ہے۔

متھیرا انسٹا گرام

متھیرا نے اپنے انسٹا گرام پر ایک اور اسٹوری  بھی ڈالی جس میں اس نے لکھا کہ میرا ووٹ نکاح کے حق میں ہے اور ہاں مجھے  اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ میں کتنی ماڈرن ہوں میں ہمیشہ اپنے بچوں کو نکاح  کا راستہ اپنانے پر  زور دوں گی اور یہ سکھاؤں گی کہ خود کو شادی کے بندھن میں باندھنا اچھاہے ،اپنی طلاق کا ذکر کرتے ہوئے متھیرا نے کہا کہ ہاں میں طلاق یافتہ ہوں لیکن میں ابھی بھی شادی پر یقین رکھتی ہوں اور اگر مجھے صحیح شخص ملے  گاتو میں دوبارہ شادی کرلوں گی۔

دوسری جانب وینا ملک نے بھی اپنے ٹوئٹر ہینڈل کے ذریعے ملالہ کو ملامت کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button