جہانگیر ترین گروپ کی وزیر اعظم سے ملاقات

منگل کو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما جہانگیر خان ترین کی حمایت کرنے والے قانون سازوں کے ایک گروپ نے وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کی اور شوگر بیرن کے خلاف تحقیقات سے متعلق اپنے تحفظات شیئر کیے۔

اسلام آباد میں اپنے اجلاس کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ، فیصل آباد سے تعلق رکھنے والے پی ٹی آئی کے ایم این اے راجہ ریاض نے کہا کہ یہ ملاقات”انتہائی خوشگوار” ماحول میں ہوئی ہے اور وزیراعظم نے انہیں یقین دلایا ہے کہ "ہر حالت میں” انصاف کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے ان خدشات کی جانچ پڑتال کرنے کے لئے وقت مانگا ہے جنکا جہانگیرترین شکار ہو رہے ہیں ، انہوں نے وعدہ کیا کہ "انصاف کے تمام تقاضے پورے کیے جائیں گے”۔ ایک سوال کے جواب میں راجہ ریاض نے بتایا کہ انہوں نے شوگر اسکام کی تحقیقات میں وزیر داخلہ اور احتساب سے متعلق وزیر اعظم کے معاون خصوصی کے کردار سے متعلق وزیر اعظم عمران کو  جہانگیر ترین کے تحفظات سے بھی آگاہ کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم نے کہا کہ وہ ذاتی طور پر اس کیس کی نگرانی کر رہے ہیں اور ہمیں یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ کسی کے ساتھ بھی ناانصافی نہیں ہونے دیں گے۔ راجہ ریاض نے واضح کیا کہ وزیر اعظم نے "تسلیم نہیں کیا” ہے کہ تحقیقات میں کسی طور پر کوئی ناانصافی کی گئی ہے ، لیکن ان کے خدشات کو دیکھنے کا وعدہ کیا ہے، راجہ ریاض نے بتایا کہ تحفظات سے نمٹنے کے بارے میں کوئی میعاد نہیں دی گئی ہے۔

الزامات

جہانگیر ترین نے دعوی کیا ہے کہ ان کے خلاف درج ایف آئی آر میں لگائے جانے والے الزامات فطری طور پر جرم نہیں تھے اور یہ سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے دائرہ اختیار میں آتے ہیں، انہوں نے کہا کہ سابقہ ​​مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے دوران ان کے تمام کاروبار کا معائنہ کیا گیا تھا اور تفتیش کاروں کو کسی بھی طرح کا غلط پتہ نہیں چل سکا ہے۔

جہانگیر ترین گروپ کے تحفظات پر وزیر اعظم عمران خان نے سینیٹر ایڈوکیٹ علی ظفر کی سربراہی میں کمیٹی قائم کردی ہے جو ترین گروپ کے تحفظات سے متعلق کو آرڈینیشن کے فرائض انجام دے گی، علی ظفر پر مشتمل کمیٹی فریقین کو سن کر اپنی رپورٹ وزیر اعظم کو پیش کرے گی۔

Back to top button