پی ٹی اے کے لیے سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنا مشکل

اسلام آباد : پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) کے چیئرمین میجر (ر) جنرل عامر عظیم باجوہ نے امید ظاہر کی ہے کہ سوشل میڈیا کے بڑے ادارے پاکستان سے کبھی نہیں نکلیں گے کیونکہ یہاں انکی مارکیٹ تیزی سے بڑھ رہی ہے ۔

پاکستان کی مارکیٹ دنیا کے ٹاپ 10 میں شامل ہے اور ہم اسے ہر ایک کے فائدے کے لیے استعمال کرنا چاہتے ہیں ۔ سوشل میڈیا کمپنیوں کو بھی ہمارے قوانین کا احترام کرنا چاہیے ، پی ٹی اے کے چیئرمین نے پیر کو ریگولیٹری فریم ورک پر توجہ دیتے ہوئے ٹیلی کام سیکٹر کی مجموعی موجودہ صورتحال پر صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا ۔

جب ڈارک ویب کے پھیلاؤ کے بارے میں پوچھا گیا تو چیئرمین پی ٹی اے نے جواب دیا کہ یہ ایک عالمی چیلنج ہے اور اس سے پیدا ہونے والے مسائل سے نمٹنے کے طریقے موجود ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی اے اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے کام کر رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریگولیٹرز کے لیے تمام مواد کو ریگولیٹ کرنا مشکل ہو رہا ہے کیونکہ تمام سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر مواد پاکستان سے باہر سے ہوسٹ کیا جا رہا ہے ۔

ڈویژنز کے سربراہان

مختلف ڈویژنز کے سربراہان کی جانب سے پریزنٹیشن دی گئی اور پی ٹی اے حکام نے کہا کہ گستاخانہ اور فرقہ وارانہ مواد ، شائستگی اور بے حیائی اور ہتک آمیز مواد سے متعلق سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کی اپنی پالیسی بھی موجود ہے ۔

پی ٹی اے کے متعلقہ ونگز کے مختلف سربراہان نے میڈیا کو بریفنگ دی اور کہا کہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز سے ردعمل عام طور پر ان کی اپنی کمیونٹی گائیڈ لائنز کے مطابق ہوتا ہے نہ کہ پاکستان کے قوانین کے مطابق ۔ البتہ قانون کے مطابق پی ٹی اے کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے مقامی قوانین اور معاشرتی اصولوں کے مطابق شہریوں کو آن لائن نقصان سے بچائے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button