اسرائیل کا مئی کی لڑائی بندی کے بعد دوبارہ حملہ

غزہ : گذشتہ ماہ کی گیارہ تاریخ کو جاری لڑائی کے خاتمے کے بعد اسرائیلی طیاروں نے غزہ میں حماس کے مقامات پر بدھ کے روز دوبارہ حملہ کیا ہے ۔

رات گئے تک جاری اسرائیلی ہوائی حملوں نے کہیں صبح تک جا کر سکون کا سانس لیا ، اب تک دونوں طرف سے ہلاکتوں کی تعداد کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔

اسرائیل کی نئی حکومت کا یہ پہلا امتحان تھا یہودی قوم پرستوں نے منگل کے روز مشرقی یروشلم میں مارچ بھی کیا ، جس نے غزہ میں حکمران جماعت کو حماس کے خلاف کارروائی کے لیے آمادہ کیا ۔

اسرائیلی فوج نے دعوی کیا ہے کہ ان کے طیاروں نے غزہ شہر اور جنوبی شہر خان یونس میں حماس کے مسلح مرکز پر حملہ کیا ہے اور ہم غزہ کیساتھ جاری دہشت گردی کی کارروائیوں کے سلسلے میں نئی ​​جنگ لڑنے سمیت تمام مسائل کے حل کے لئے تیار ہیں ۔

فوج کا کہنا ہے کہ یہ حملے غزہ کی سرحد کے قریب واقع کمیونٹیوں میں کھلے کھیتوں میں بیس باغیوں کی وجہ سے ہوئے جن کی اسرائیلی فائر بریگیڈ نے اطلاع دی تھی کہ وہ لوگ بھاری بھرکم دھماکہ خیز مواد سے لدے راکٹ لانچ کرنے کے ارادے رکھتے ہیں۔

حماس کے ترجمان نے اسرائیلی حملوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم فلسطینی یروشلم میں اپنی بہادری سے جاری مزاحمت اور اپنے حقوق اور مقدس مقامات کا دفاع کرتے رہیں گے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button