بولتی آنکھوں والا انسان ،عرفان خان

آج ایک سال ہوچکا ہے جب بہترین اداکاری کا مظاہرہ کرنے والے اداکار عرفان خان کا انتقال ہوا تھا، اگرچہ انہیں اس دنیا سے گئے ایک سال گزر چکا ہے ، لیکن پھر بھی وہ لاکھوں دلوں پر راج کرتے ہیں ،عرفان خان خاموش طبع آدمی تھے لیکن ان کی آنکھیں جذبات سے بھری ہوئی تھیں،پچھلے سال عرفان خان کے اچانک انتقال سے بھارتی فلم انڈسٹری میں ایک ناقابل تلافی نقصان ہو گیا کیونکہ اس کا پاور ہاؤس ختم ہوگیا تھا۔

اداکار عرفان نے اپنے ادا کردہ مختلف کرداروں کے ذریعے ہیروئیزم کی طرف لوگوں کے نقطہ نظر کو تبدیل کرنے میں بہت بڑا کردار ادا کیا، سنجیدہ ، مزاحیہ کرداروں یا ان کے ادا کردہ ضمنی کرداروں کے لئے سب انہیں یاد کرتے ہیں لیکن ان میں موجود رومانٹک اداکار عرفان خان کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ، جس نے اپنے کرداروں کے ذریعہ محبت نام کے اس وسیع جذبے کے مختلف رنگوں کو پینٹ کیا۔

پیکو جو انکا پہلا رومانٹک کردار سمجھا جاتا ہے ،اس سے بہت پہلے وہ ایک فلم "لائف ان میٹرو” میں بیوقوف درمیانی عمر کے مونٹی کے کردار میں سامنے آئے ، جو بیوی کو ڈھونڈنے کے لئے بے چین ہونے کے باوجود ہمیں رزک لینا سیکھا گیا۔ نیم سیک نے ہمیں این آر آئی اشوک گنگولی کی شکل میں ایک باضابطہ باپ اور ڈاٹنگ شوہر دیا، جس کی پوشیدہ موجودگی نے الفاظ کے مقابلے میں کہیں زیادہ اثر ڈالا، عرفان ان عام کرداروں کی تصویر کشی کرنا جانتا تھا جو اپنے ہونے سے مستقل احساس اور آگاہی فراہم کرتے ہیں۔

آخری ایام

پاور فل اداکار جو آخری بار انگریز ی میڈیم میں دیکھے گئے تھے ، 53 برس کی عمر میں انتقال کر گئے تھے، انھیں 2018 میں نیوروینڈوکرائن ٹیومر کی تشخیص ہوئی تھی، ان کی مقبولیت صرف بالی ووڈ تک ہی محدود نہیں بلکہ ہالی ووڈ تک بھی تھی۔انہوں نے ہالی ووڈ کی فلموں جیسے جوراسک پارک (2015) ، انفارنو (2016) میں ناقابل فراموش کام کیا تھا۔

حال ہی میں اکیڈمی اور گولڈن گلوب ایوارڈز نے مرحوم اداکار کو خراج تحسین پیش کیا، آج ان کی پہلی یوم وفات ہے اور ان کے مداح بالی ووڈ کے ایک بہترین اداکار کو خراج تحسین پیش کررہے ہیں۔

کچھ دن قبل ان کے بیٹے بابیل خان ، جو فلم قلعہ سے اداکاری کی دنیا میں قدم رکھ رہے ہیں نے بھی انکشاف کیا تھا کہ ان کے والد وفات سے قبل ڈپریشن کا شکار تھے۔

Back to top button