بھارت ورلڈ کپ کی میزبانی کرے گا

آئی سی سی نے ٹی 20 ورلڈ کپ 2021 کے انعقاد کے مقامات اور تاریخوں کی تصدیق کردی ہے۔ ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ 17 اکتوبر سے شروع ہوگا اور 14 نومبر کو متحدہ عرب امارات اور عمان میں اختتام پذیر ہوگا۔

آئی سی سی کے اعلی عہدے داروں کی جانب سےبتایا گیا ہے کہ ٹورنامنٹ کا پہلا مرحلہ عمان میں ہوگا اور باقی کھیل متحدہ عرب امارات میں ہوں گے۔

قبل ازیں ہندوستان کو اس ایونٹ کی میزبانی کرنا تھی لیکن بھارت میں خراب وبائی حالت کی وجہ سے بی سی سی آئی اور آئی سی سی کو ٹورنامنٹ کو یو اے ای منتقل کرنا پڑا۔

ورلڈ کپ کے انعقاد کے لیے  متحدہ عرب امارات میں تین مقامات کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں ابو ظہبی ، دبئی ، شارجہ شامل ہیں۔ مسقط میں عمان کرکٹ اکیڈمی بھی میزبان مقامات میں شامل ہے۔

دریں اثنا ، آئی پی ایل 2021 کا دوسرا مرحلہ مبینہ طور پر متحدہ عرب امارات میں 17 ستمبر سے شروع ہوگا اور فائنل 10 اکتوبر کو کھیلا جائے گا ، جبکہ ورلڈ کپ 17 اکتوبر سے 4 نومبر تک کھیلا جائے گا۔

آئی سی سی نے مبینہ طور پر ورلڈ کپ سے قبل متحدہ عرب امارات کی پچوں کے لئے آرام کا وقت فراہم کرنے کی ضمانت دی ہے۔

 ٹی 20 ورلڈ کپ کے ابتدائی مرحلے میں بنگلہ دیش ، سری لنکا ، آئرلینڈ ، نیدرلینڈز ، اسکاٹ لینڈ ، نمیبیا ، عمان ، اور پاپوا نیو گنی جیسی ٹیمیں شامل ہوں گی اور ان میں سے 4 ٹیمیں سپر12 راؤنڈ کے لیے کوالیفائے کریں گی۔

سی ای او جیف ایلارڈائس

آئی سی سی کے قائم مقام سی ای او جیف ایلارڈائس نے انکشاف کیا ہے کہ بورڈ ہندوستان میں ورلڈ کپ کی میزبانی کے لیےمنتظر تھا۔ تاہم بھارت میں وبائی صورتحال کی وجہ سے ایک سخت فیصلہ کرنا پڑا۔

انکا کہنا تھا کہ ہماری اولین  ترجیح یہ ہے کہ آئی سی سی مینز ٹی 20 ورلڈ کپ 2021 کو مکمل طور پر اور موجودہ ونڈو (کورونا کی شرح میں کمی کے دور میں)میں بحفاظت منعقدکیا جائے۔

 ہمیں یقین  ہے کہ جیو محفوظ ماحول میں ملٹی ٹیم ایونٹ کا ایک ثابت شدہ بین الاقوامی میزبان ملک میں انعقاد کرکے ایونٹ کو کامیاب بنایا جا سکتا ہے،یو اے ای میں انعقاد کے باوجود میزبانی کے حقوق بھارت کے پاس ہیں ۔

بی سی سی آئی کے صدر سوراو گنگولی نے اعتراف کیا کہ ہندوستانی کرکٹ بورڈ متحدہ عرب امارات اور عمان میں ٹورنامنٹ کی میزبانی کے منتظر ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ بورڈ زیادہ خوش ہوتا اگر  ٹورنامنٹ ہندوستان میں کھیلا جاتا لیکن  وہ صورتحال کی سنگینی کو سمجھتے ہیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button