زر مبادلہ اور ترسیلات زر میں اضافہ

مالی سال 2021 میں ترسیلات زر میں 27 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق 2003 سے اب تک پہلی بار ترسیلات زر میں 27 فیصد کا تیز ترین اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

مجموعی طور پر مالی سال 2021 میں ترسیلات زر 29 اعشاریہ 4 ارب ڈالر تک پہنچ گئیں۔ اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ ترسیلات زر سے بیرونی شعبے کی حالت بہتر بنانے میں مدد ملی۔

دوسری جانب ملکی زر مبادلہ کے ذخائرپونے 5 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق عالمی بینک اور چین کی جانب سے قرض کی فراہمی کے بعد پاکستان کے زر مبادلہ کے ذخائر پونے 5 سال کی بلند ترین سطح پر ہیں۔

اعلامیے کے مطابق عالمی بینک نے 40 کروڑ ڈالرز اور چین نے 1 ارب ڈالرز کی فراہمی پاکستان کو کردی ہے، جسکے بعد پاکستان کے زر مبادلہ کے زخائر 24 ارب ڈالرز پر پہنچ گئے ہیں جو کہ پچھلے پونے5 سالوں کی بلند ترین سطح پر ہیں۔

اس  سے پہلے 2016 میں پاکستانی زر مبادلہ کی سطح 24ارب40 کروڑ ڈالر تھی۔پاکستان کو عالمی بینک اور چین سے قرض کی فراہمی کے بعد مجموعی ڈالرز کے ذخائر کا حجم 24 ارب 48 کروڑ 40 لاکھ ڈالرز ہوگیا ہے۔

اسٹیٹ بینک کے پاس 12 ارب 23 کروڑ ڈالرز اور بینکوں کے پاس 7 ارب 18 کروڑ ڈالرز ڈپوزٹ ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button