پردے سے متعلق بیان پر عمران خان کی حمایت

وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے منگل کو ایک پریس کانفرنس میں  کہا  ہے کہ  کسی ’لبرلی کرپٹ‘   کوخواتین کی رہنما اور نمائندہ بننے کی ہمت نہیں کرنی چاہئے۔

پارلیمانی سیکریٹری برائے قانون و انصاف ملیکہ علی بخاری اور پارلیمانی سیکریٹری برائے منصوبہ بندی ، ترقیات و اصلاحات کنول شوزب کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں  زرتاج گل نے اپوزیشن جماعتوں کو  واضح کیا کہ پاکستان میں وومین امپاور مینٹ کی واحد علامت عمران خان ہیں ۔

وزیر اعظم عمران خان کے غیر ملکی  چینل کو انٹرویو میں  خواتین کے کپڑوں سے متعلق  بیان کے خلاف  سوشل میڈیا پر بحث چھڑچکی ہے ،عمران خان کی حمایت میں #”پردہ شریعت پردہ تحافظ ”  ٹاپ ٹرینڈ بن گیاہے،صارفین نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔

زرتاج گل نے  کہا کہ نام نہاد لبرلز  کی طرف سے وزیر اعظم عمران خان کی  عالمی سطح پر ملک کی مثبت اور ترقی پسند امیج کو پیش کرنے کی کوششوں کو مسخ کرنے کے لئے بار بار کوششیں کی جارہی ہیں۔

 انہوں نے ان الزامات کو سختی سے مسترد کیا  کہ وزیر اعظم جنسی تشدد کا نشانہ بننے والے افراد کی حمایت کے بجائے  ان کو اس ظلم کا سبب قرار دے رہے ہیں ۔

پانچ خواتین پارلیمنٹیرین

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان خواتین کو بااختیار بنانے کی حقیقی علامت ہیں کیوں کہ پہلی بار پانچ خواتین پارلیمنٹیرین کو کابینہ کی ممبر بنایا گیا ہے ان کے ساتھ 12 پارلیمانی سیکریٹری خواتین ہیں جن میں ملیکہ بخاری ، کنول شوزب اور عالیہ حمزہ ملک شامل ہیں جو پارلیمنٹ میں اپنی وزارتوں کی نمائندگی کرتی ہیں۔

زرتاج نے اس بات کو واضح کیا کہ انہیں ایک مسلمان عورت ہونے کے ناطے اپنے کلچر اور مذہب پر فخر ہے ،انہوں نے کہا کہ میرا مذہب اور ثقافت مجھے عزت دیتا ہے اور ہم خواتین کے  ان حقوق کے ماننے والے ہیں جو اسلام کی تعلیم میں شامل ہیں۔

 اسلام مجھے حقیقی آزادی دیتا ہے اور مجھے اس پر فخر ہے۔ ہماری ثقافت میں خواتین کا احترام کرنے کی متعدد نظیریں موجود ہیں جہاں مرد احترام کے ساتھ لمبی قطار اور بھیڑ والی جگہوں پر عورتوں کے لیے خالی جگہیں چھوڑ دیتے ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کے بارے میں سنجیدہ ہیں اور وہ جنسی تشدد کا سامنا کرنے سے خواتین کے تحفظ کو یقینی بنانا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف پاکستان کی تحریک کے بعد واحد جماعت ہے جس نے ملک بھر میں خواتین کو متحرک کیا ،پاکستان کی تاریخ میں ،تحریک پاکستان میں قائداعظم کے ہمراہ فاطمہ جناح کی شاندار شخصیت کی مثال موجود ہے۔

زرتاج گل نے کہا کہ اس سلسلے میں میں ایک واضح مثال ہوں جو ایک جاگیردار قبائلی معاشرے سے پارلیمنٹیرین کے طور پر منتخب ہوئی تھی اوراب میں  کابینہ کا رکن بن گئی ہوں ، جو صرف وزیر اعظم عمران خان کی مضبوط سیاسی حمایت اور پشت پناہی کی وجہ سے ممکن ہوا ہے۔

سکریٹری برائے قانون و انصاف بیرسٹر ملیکہ علی بخاری

پارلیمانی سکریٹری برائے قانون و انصاف بیرسٹر ملیکہ علی بخاری نے کہا کہ وزارت قانون و انصاف کووزیر اعظم کی پہلی ہدایت خواتین پر جنسی تشدد اور امتیازی سلوک کو کم کرنے کے لئے قوانین وضع کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپ خواتین کے لئے وزیر اعظم کی ترجیحات کا فیصلہ ان کے کسی بھی بیان کی سیاق و سباق سے ہٹ کر ترجمانی  کے ذریعے  نہیں کرسکتے ہیں ، مزید انہوں نے روشنی ڈالی کہ وزیر اعظم نے پارلیمنٹ سے منظور شدہ عصمت دری کے قانون کے تحت خصوصی عدالتیں قائم کیں جو  کسی بھی سابقہ ​​حکومت نے کبھی نہیں کیا تھا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button