چاہتا ہوں ہرے پاسپورٹ کی عزت ہو

وزیر اعظم عمران خان کا آزاد کشمیر میں بھمبر کے انتخابی مہم کے جلسےسے خطاب میں کہنا تھا کہ ہمارے نبی پاکﷺ کے دور میں مدینہ میں دو سپر پاورز تھیں نبی کریمﷺ مدینہ تشریف لائے تو دونوں سپر باورز نے 13 سال بعد اور14 سال بعد گھٹنے ٹیک دیے۔

اللہ رب العزت قرآن میں کہتا ہے کہ میرے نبی ﷺ کی زندگی سے سیکھو  اور انکی پیروی کرو اسی میں تمھارے لیے بہتری ہے۔

شریعت پر چل کر بڑا انسان اور ریاست مدینہ کے اُصولوں پر چل کر بڑی قوم بنا جاسکتا ہے۔ووٹ ڈالنے جائیں تو لوگوں سے پوچھیں جس جماعت کو ووٹ  دیا اُنکا لیڈر صادق اور امین ہے۔

عمران خان نے کہا کہ اگر آپکا لیڈر ایماندار ہے اور کینڈیڈیٹ دو نمبر بھی ہے وہ ڈرے گا کچھ کرتے ہوئے۔ہوسکتا ہے تحریک انصاف نے بھی کسی دو نمبر کو ٹکٹ دیا ہو لیکن میں چوری نہیں کرتا تو اسے کیسے پیسے بنانے دوں گا۔

انہوں نے  کہا کہ جب میرے خلاف انتقامی کاروائی کی تو میں نے عدالتوں کا سامنا کیا ،سپریم کورٹ میں کھڑے ہوکر 8 مہینے تک ایک ایک چیز کا جواب دیا۔

ایسا نہیں ہوسکتا کہ کمزور جرم کرنے بعد  جیلوں میں جائے اور طاقتور مجرم این آر او لے  کر  ملک سے باہر جاکر بیٹھ جائے اور اپنے پوتے کا پولو میچ دیکھے۔

پولو بادشاہوں کا کھیل ہے کسی عام آدمی کا نہیں۔پوتے کے پاس اتنا پیسہ کہاں سے آیا ۔عوام ،یہ آپکا پیسہ ہے۔

ملک سے فرار

میں ملک سے اس لیے نہیں بھاگا کیونکہ میں نے چوری نہیں کی تھی۔ یہ باہر اس لیے بھاگے ہوئے ہیں کیونکہ تیس سال سے ملک کو لوٹ رہے تھے۔ انکے بچے بھی ملک سے فرار ہیں۔

نواز شریف اداکاری کر کے ملک سے بھاگے ،ایسی اداکاری کی کہ ہماری کابینہ کی خواتین  اور دیگر اراکین رونے لگے۔یہاں سے بیمارنواز شریف گیا تھا ،وہاں سے دوسرا نکلا ۔

عداتوں کو تحریک انصاف کنٹرول نہیں کرتی ۔عدالتیں آزاد ہیں تو یہ لوگ ملک سے کیوں بھاگے ہوئے ہیں۔کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے۔قانون سے بالا تر ملک سے بھاگے ہوئے ہیں۔

نواز شریف کا منشی ہماری حکومت آنے سےپہلے ہی بھاگ گیا تھا۔ ڈر کس چیز سے رہے ہو، وطن واپس کیوں نہیں آرہے۔ کوئی بھیک مانگنے والے کی،قرضہ مانگنے والے کی عزت نہیں کرتا۔ سچے آدمی اور انصاف کرنے والے کی دنیا عزت کرتی ہے۔

ہم ظلم اور پرانے نظام کے خلاف جہاد کر رہے ہیں ۔عوام کی طاقت سے مافیا کو شکست دوں گا۔آپکے کپتان کو مقابلہ کرنا آتا ہے۔

نیا کشمیر

نیا پاکستان بنا کر دکھاؤں گا۔ آنے والے دنوں میں آپ مقبوضہ کشمیر کو آزاد دیکھیں گے۔عمران خان نے کہا کہ  ہم نےبلے کو ووٹ لگا کر نیا کشمیر کھڑا کرنا ہے، انشاءاللہ تعالیٰ۔

یونائیٹڈ نیشنز کی جنرل اسمبلی میں کشمیر کانام اس لیے نہیں لیا کہ مجھے ووٹ چاہیے تھے بلکہ  بچپن  سے میں نے یہ فیصلہ کیا تھا کہ اللہ  نے جب بھی  مجھے موقع دیا میں کشمیر کا کیس ساری دنیا میں لڑوں گا۔میں بھارت کو کہتا ہوں کہ وہ کشمیر کا جغرافیا بدلنا چاہتا ہے لیکن وہ اس میں ناکام ہی رہے گا۔

عمران خان نے حاضرین کو متوجہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ اتنے قریب قریب کھڑے ہیں ،مجھے آپکی فکر ہورہی ہے،کہیں ایسا نہ ہو کہ بھمبر جلسے کے بعد کئی لوگ بیمار ہوگئے۔کورونا ابھی ختم نہیں ہوا آپ لوگ ماسک پہنیں اور احتیاط کریں۔ماسک پہننے سے آپ اس بیماری سے بچ سکتے ہیں۔

پڑوسی ملک میں کورونا کے باعث لاکھوں ہلاکتیں ہوچکی ہیں۔انکی معیشت کو نقصان ہوا ،کروڑوں لوگ غربت کی لکیر سے نیچے چلے گئے۔اللہ نے اب تک اس ملک کو انتہائی صورتحال سے بچایا ہوا ہے۔

آپکو پتا ہے کتنی زندگی میری دھوپ میں کرکٹ کھیلتے گزری پھر بھی  آج کی گرمی میں اسٹیج پر بیٹھ کر میری قمیص پسینے سے بھیگ گئی ہے۔

آپ  لوگ اتنے قریب قریب کھڑے ہیں ،آپکے جذبے اور جنون کو داد دیتا ہوں۔میں آپکے مستقبل کا سوچتا ہوں ،چاہتا ہوں ہمارا ملک عظیم قوم بنے۔کوئی  بھی شہری پاکستانی  پاسپورٹ لے کر  نکلے تو اسے دنیا میں عزت ملے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button