چین میں بینکاری شروع کرنے والا پہلا پاکستانی بینک

ایچ بی ایل کی چینی دارلحکومت بیجنگ میں برانچ کھولنے کی افتتاحی تقریب کا انعقاد کیا گیا ،  تقریب میں کلائنٹس، ریگولیٹرز اور ایچ بی ایل کے بین الاقوامی نیٹ ورک سے تعلق رکھنے والے سینئر ایگزیکٹیوز شریک ہوئے۔

تقریب میں پاکستان سے، ڈپٹی گورنر، اسٹیٹ بینک آف پاکستان، جمیل احمد، چیئرمین ایچ بی ایل سلطان علی الانہ، ایچ بی ایل کے صدر اور چیف ایگزیکٹیو افسر محمد اورنگزیب سمیت ایچ بی ایل کے سینئر ایگزیکٹیوز اور کسٹمرز نے ورچوئل تقریب میں شرکت کی۔

چین میں ایچ بی ایل کے سفر کا آغاز 2005ء میں ہوا تھا جب اس نے بیجنگ میں اپنا نمائندہ دفتر قائم کیا تھا، بعد ازاں 2017ء میں ارومچی شہر میں برانچ آپریشنز کا آغاز ہوا ،2019 میں بیجنگ میں برانچ کھولنے کے لئے حبیب بینک لمیٹڈ نے لائسنس حاصل کیا تھا اور آج بیجنگ میں اپنے برانچ آپریشنز کا افتتاح کیا۔

ایچ بی ایل بیجنگ میں بینک کے معزز کلائنٹس کو پروڈکٹس اور سروسز کی تمام تر سہولیات فراہم کرتا ہے۔ ایچ بی ایل کا کہنا ہے کہ پاکستان اور چین کی حکومتوں سمیت ریگولیٹرز کا شکر گزار ہے ، جنھوں نے برانچ کھولنے کی اجازت دیتے ہوئے اپنے بھروسے اور اعتماد کا اظہار کیا۔

چین میں بینکاری کی خدمات فراہم کرنے کے حوالے سے حبیب بینک لمیٹڈ پہلا پاکستانی بینک ہے جبکہ جنوبی ایشیاء کے دیگرتین ممالک میں شامل ہے جو چین میں مکمل آر ایم بی بزنس کی سہولت فراہم کرتے ہیں، بیجنگ میں برانچ کے قیام سے چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ اور ایک خطہ ایک سڑک کے نظریہ کے تحت دونوں ممالک کے پبلک پرائیویٹ اداروں کے اشتراک کار میں مزید وسعت آئے گی، پاک چین معاشی ‘ سماجی اور ثقافتی رابطے دو طرفہ تعاون اور باہمی عزت و احترام ایک مثال ہیں، سی پیک کے منصوبوں کی فنانسنگ کے حوالے سے ایچ بی ایل کلیدی کردار ادا کررہا ہے۔

ایچ بی ایل کے لیے چین کی مارکیٹ کی اہمیت صرف چین اور سی پیک میں بزنس تک محدود نہیں، بلکہ ایچ بی ایل اپنے بین الاقوامی نیٹ ورک کے ذریعے مختلف ممالک میں چین کی کمپنیوں کی شمولیت کو مزید وسیع کرسکتا ہے۔

Back to top button