عید کی نماز کے لیے گائیڈ لائنس

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشنز سینٹر (این سی او سی) نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے عید الفطر کی نماز کے لئے رہنما خطوط جاری کیے ہیں۔

وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقیات اسد عمر کی زیر صدارت کل ایک اجلاس ہوا جس میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان بھی ویڈیو لنک کے ذریعے شامل ہوئے۔

یہ اجلاس 8 سے 16 مئی تک ملک بھر میں چلائے جانے والے متحرک کنٹرول کے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے کیا گیا تھا۔

این سی او سی کی جانب سے جاری بیانیےمیں کہا گیا ہے کہ ، "16 مئی 2021 تک عائد کی جانے والی پابندیوں پر عمل کو یقینی بنا کر ملک میں کورونا کے پھیلاؤ کو روکا جائے”۔

فورم نے قوم سے اپیل کی کہ وہ پاکستانی عوام کی فلاح و بہبود کے لئے اٹھائے گئے ان اقدامات کی حمایت کے لئے متحد اور ثابت قدم رہیں۔

: عید الفطر کی نماز کے لیے ہدایات


نماز کووڈ پروٹوکول کے ساتھ کھلی جگہوں پر منعقد کی جانی چاہئے، اگر کسی مسجد میں نماز پڑھنے کی کوئی مجبوری ہے تو کھڑکیوں اور دروازوں کو کھلا رکھا جانا چاہئے۔

عید کی نماز میں رش کو کم سے کم کرنے کے لئے ایک مقام پر 2-3 شفٹوں میں اجتماعات کیے جائیں۔ <

خطبہ کو بہت مختصر اور جامع رکھنے کی کوشش کی جانی چاہئے ۔ <

بیمار ، بوڑھے اور 15 سال سے کم عمر بچےنماز میں شرکت نہ کریں۔ <

چہرے کا ماسک پہننا لازمی ہے۔ <

افراد کے رش سے بچنے کے لئے نماز کے مقام پر متعدد داخلی اور خارجی راستے بنائے جائیں۔ <

داخلی راستوں پر تھرمل اسکریننگ ڈیوا ئسز نصب کی جائیں۔ <

داخلی اور خارجی راستوں پرہاتھ صاف کرنے کے لیے سینیٹائزر کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ <

نماز میں کھڑے ہونے کے لیے پنڈال میں 6 فٹ سماجی فاصلے کے نشانات لگائے جائیں۔ <

نمازی گھروں سےاپنے ساتھ جائے نماز لانے کے پابند ہوں گے۔ <

عید کی نماز کے لیے آنے والے افراد گھر سے وضو کر کے عید گاہ آئیں گے <

نماز کے بعد مصافحہ اور معانقے سے پرہیز کریں۔ <

نماز سے پہلے اور بعد میں کوئی جمگھٹا نہ لگائیں۔ <

بھیڑ کے انتظام کے لئے اچھی طرح سے رکھے ہوئے پارکنگ ایریاز کو تیار کیا جائے۔ <

Back to top button