مسافر ٹرینیں آپس میں ٹکرا گئیں

گھوٹکی کے قریب دو مسافر ٹرینیں آپس میں ٹکرا گئیں ، جس میں کم از کم 36 سے زیادہ افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے ہیں۔

عہدیداروں نے بتایا کہ صوبہ سندھ میں سفر کرنے والی ایک ٹرین پٹری سے اتر کر دوسرے ٹریک پر اترگئ تھی۔ مسافروں سے بھری ایک دوسری ٹرین پھر اس سے ٹکرا گئی اور الٹ گئی ۔

یہ حادثہ پیر کے روز علی الصبح اس وقت پیش آیا جب کراچی سے آنے والی ملت ایکسپریس پٹری سے اتر گئی اور ایک اور پٹری پر جا گری۔ راولپنڈی سے آنے والی سرسید ایکسپریس اس سے ٹکرا گئی اور الٹ گئی۔

ریسکیو ٹیمیں زخمیوں کو قریبی اسپتالوں میں لے گئیں اور خیال کیا جارہا ہے کہ متعدد کی حالت تشویشناک ہے۔

پاکستان میں گذشتہ برسوں کے دوران ٹرین کے مہلک حادثات دیکھنے میں آ رہے ہیں۔

مقامی میڈیا رپورٹس کے مطابق 2013 اور 2019 کے درمیان 150 افراد اس طرح کے واقعات میں ہلاک ہوچکے ہیں ۔

ضلع گھوکٹی کے ایک سینئر اہلکار عثمان عبد اللہ نے رائٹرز نیوز ایجنسی کو بتایا کہ یہ جاننا مشکل ہے کہ ابھی بھی کتنے افراد ٹرین کے نیچے پھنسے ہو ئے ہیں۔

تقریبا چھ سے آٹھ بوگیاں مکمل طور پر تباہ ہو گئیں … جن میں ایک سلیپر ڈبہ ، اے سی ایئر کنڈیشنڈ کلاس اور ساتھ ہی اکانومی کلاس بھی ہے ، جس میں ایک ٹرین کے 47 سے 50 افراد اوردوسری ٹرین کے تقریبا 50 سے 60 افراد اس حادثے کا شکارہوئے ہیں۔

سائٹ سے ملنے والی فوٹیج میں پٹڑی کی سائیڈ پر پڑی متعدد بوگیوں کے ملبے کو دکھایا گیا ہے ۔ یہ واضح نہیں ہے کہ پٹری سے اتر جانے کی وجہ کیا ہے ۔

Back to top button