وکلاء کی جعلی ڈگریوں کیخلاف پینل کی تشکیل

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے منگل کو وکلاء کی جعلی ڈگریوں اور قانون کی تعلیم پڑھانے والے کالجوں کے معیار کی جانچ کے لیے کمیٹی بنانے کا عندیہ دیا ہے ۔

قائم مقام چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے تین رکنی بینچ نے وکلاء کی جعلی ڈگریوں سے متعلق کیس کی سماعت کی ۔ عدالت نے جعلی ڈگریوں کے معاملے کو دیکھنے کے لیے بار کونسل سے سینئر پروفیشنل وکلاء کے نام مانگے ہیں ۔

سماعت کے دوران ، قائم مقام چیف جسٹس نے اس بات کا جائزہ لیا کہ عدالت نے تو وکلاء کے تعلیمی معیار کو بہتر بنانے کے لیے معاملہ اٹھایا ہے ، تاہم انہوں نے کہا کہ عدالت عظمیٰ کے فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہوا ۔

قائم مقام چیف جسٹس نے کہا کہ بار کونسل کو معاملے کا جائزہ لینا چاہیے ۔ فریقین کے وکیل عامر علی شاہ نے عدالت کو بتایا کہ جعلی ڈگریوں پر مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) تشکیل دی جا سکتی ہے ۔

چیف جسٹس صاحب نے کہا کہ ایک کمیٹی تشکیل دی جا سکتی ہے ، انہوں نے مزید کہا کہ بار کونسل کو اس حوالے سے نام بتانے چاہئیں ۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت دو ہفتوں کے لیے ملتوی کردی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button