وفاق اور سندھ آمنے سامنے

کراچی میں ٹیکس چوری پر ایکشن لینے پر ڈی جی  کسٹمز کے خلاف پرچہ  کاٹ دیا گیاجس پر وزیر خزانہ شوکت ترین نے  وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کو پولیس کے خلاف  کاروائی کے لیے خط لکھ دیا ۔

کسٹمز نے زبیر اسٹیلز کے مالک کو گرفتار کیا تھا ،ملزم پر ڈھائی کروڑ روپے ٹیکس چوری اور 4 لاکھ  39 ہزار  ڈالر کی منی لانڈرنگ کا کیس بنا تھا۔

کسٹم کورٹ سے ضمانت پر رہائی کے بعد ملزم نے ایس پی جمشید  ٹاؤن سے گٹھ جوڑ کر کے ڈی جی کسٹمز کے خلاف  پرچہ درج کرادیا،وزیر خزانہ شوکت ترین نے وزیر اعلی سندھ کو لکھا کہ ریاست کا ایک ادارہ  دوسرے کے خلاف استعمال  ہورہا ہے۔

انہوں نے لکھا کہ  وزیر اعلی سندھ سے اپیل کرتا ہوں کہ  پولیس کی ڈی جی کسٹمز انٹیلی جنس کے خلاف کاروائی   کرنے کے خلاف اعلی سطح پر سخت ایکشن لیں۔

وزیر اعلی سندھ نے معاملے کا نوٹس لے لیا اور  ایس پی کے خلاف انکوائری کیس پولیس کے خود احتسابی یونٹ کے حوالے کردیا۔

دوسری جانب ایس پی جمشید ٹاؤن فاروق بجرانی کہتے ہیں کہ انہوں نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کے حکم پر کاروائی کی تھی،انکوائری سے  معلوم ہوا تھا کہ کسٹم عملے نے فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں شہری کا ڈرائیور زخمی ہوا تھا۔علاوہ ازیں کسٹم نے کاروائی سے قبل پولیس کو نہیں  بتایا تھا ۔

واضح رہے کہ اس ساری صورتحال کے بعد وفاق اور سندھ کے درمیان تنازعہ   کھڑا ہوگیا ہےاورکسٹمز انٹیلی جنس پر درج ایف ئی آر  سے متعلق آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کرلی گئی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button