ہائی پروفائلز اصولوں سے مستثنیٰ قرار ، فیس بک

سان فرانسسکو : فیس بک نے کچھ مشہور شخصیات ، سیاستدانوں اور دیگر ہائی پروفائل صارفین کو کوالٹی کنٹرول میکانزم کے طور پر شروع کیے گئے اپنے پروگرام میں پوسٹس کے لیے اپنے کچھ اصولوں سے مستثنیٰ قرار دیا ہے ۔

فیس بک کی اندرونی پالیسی کا حوالہ دیتے ہوئے ایک رپورٹ کے مطابق ، اس پروگرام کو “کراس چیک” یا “ایکس چیک” کا نام دیا جاتا ہے ، جو لاکھوں ایسے معزز صارفین کو ان قوانین سے بچاتا ہے جو فیس بک سوشل نیٹ ورک پر یکساں طور پر عام صارف پر لاگو کرتا ہے ۔

فیس بک کے ترجمان اینڈی اسٹون نے سلسلہ وار ٹویٹس میں اپنے اس پروگرام کا دفاع بھی کیا ہے ، لیکن انہیں معلوم ہے کہ فیس بک کے ان قوانین کا نفاذ ہمیشہ رہے گا یہ کبھی بھی تبدیل ہو سکتا ہے ۔

یہ موضوع اس وقت زیادہ زیر بحث بنا جب ایک آرٹیکل میں ہائی پروفائل لوگوں کی پوسٹوں کی مثالیں دی گئی ، جن میں فٹ بال اسٹار نے نیمار کی ایک خاتون کی عریاں تصاویر دکھائی جن کے ساتھ ریپ ہوا تھا مگر بعد میں فیس بک سے اس کو ہٹا دیا گیا تھا ۔

پوسٹنگ کے حوالے سے دوہرا معیار فیس بک کی جانب سے جاری کی گئی پالیسی اور اسکی یقین دہانی کی خلاف ورزی کرتا ہے ۔

اے ایف پی کی انکوائری میں بورڈ کے ترجمان جان ٹیلر نے کہا ہے کے ، نگرانی بورڈ نے متعدد مواقع پر فیس بک پر پوسٹنگ کے عمل میں شفافیت کے فقدان کے بارے میں اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے ، خاص طور پر فیس بک کے ہائی پروفائل اکاؤنٹس کے انتظام سے متعلق ہمیں ہمیشہ تشویش رہی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button