الیکٹرانک ووٹنگ کا سسٹم نہیں آنے دیں گے

انتیس اپریل کو این اے 249 کے ضمنی انتخابات میں کراچی میں حصہ لینے والی تمام جماعتوں نے دعوی کیا کہ انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے سوائے فاتح پارٹی ، پیپلز پارٹی کے ،جس کے بعد وزیر اعظم عمران خان نے ہفتے کے روز اپوزیشن جماعتوں کو ایک بار پھر انتخابی اصلاحات کی دعوت دی تھی  ۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں ٹرن آؤٹ کم ہونے کے باوجود تمام جماعتیں بدتمیزی کر رہی ہیں اور دھاندلی کا دعوی کر رہی ہیں، انہوں نے لوگوں کو یاد دلایا کہ حال ہی میں ہونے والے ڈسکہ این اے 75 کے ضمنی انتخابات اور سینیٹ انتخابات میں بھی ایسا ہی ہوا تھا ۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے اتوار کے روز وزیر اعظم عمران خان کے عام انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) کے استعمال کی تجویز کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ساری دنیا نے اس نظام کو مسترد کردیا ہے ۔

ٹوئیٹر پر جاری ایک بیان میں شہباز نے کہا کہ الیکٹرانک را ئے دہندگی کے نظام کو پوری دنیا مسترد کرتی ہے، الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے اسے ناقابل عمل قرار دیا ہے لہذا ایسے اہم قومی کام کسی کی انفرادی درخواست یا حکم پر انجام نہیں دیئے جا سکتے ہیں ۔

Back to top button