عوام کو بجلی کا جھٹکا پھر لگنے کو

بجلی تقسیم کار کمپنیوں نے رواں مالی سال وفاقی کابینہ میں سہ ماہی ایڈجسٹمنٹ کی درخواست دائر کردی تھی، جس میں صارفین سے سہ ماہی ایڈجسٹمنٹ کی مد میں 91ارب 36کروڑ وصول کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں 15 مارچ کو کابینہ توانائی کمیٹی کے منظور شدہ سہ ماہی ایڈ جسمٹنٹ پلان کی منظوری دی تھی۔ایڈجسٹمنٹ پلان کے تحت سوا 2 سال میں بجلی مرحلہ وار 4 روپے 60 پیسے تک مہنگی ہوگی جس سے صارفین پر سوا 2 سالوں میں مرحلہ وار 1060 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا۔

درخواست میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں نے پاور پلانٹس کے مرمت کےلیے5ارب 18کروڑ بھی صارفین کے کھاتے میں ڈالنے کے ساتھ ساتھ لائن لاسز اور بجلی چوری کے9 ارب 28 کروڑ بھی صارفین سے وصول کرنے کی تیاری کرلی ہے۔

دونوں سہ ماہی کے لیے 70 ارب روپے کپیسٹی ادائیگی کا بوجھ بھی صارفین پرڈالاجائےگا ، سہ ماہی ایڈجسٹمنٹ کیلئے کابینہ توانائی کمیٹی 30 مارچ کو درخواست پر سماعت کرے گی، منظوری کے بعد صارفین پر ایک روپے پچاس پیسے فی یونٹ کااضافی بوجھ بڑھنے کا امکان ہے۔

Back to top button