الیکٹرک بس منصوبہ: پہلی بس کراچی میں چلادی گئی

گزشتہ روز سندھ وزیرٹرانسپورٹ اویس قادر شاہ نے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت الیکٹرک بس کا افتتاح کیا۔

وزیر ٹرانسپورٹ اویس قادر شاہ نے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ابتدائی مرحلے میں الیکٹرک بس ٹاور سے سہراب گوٹھ تک چلے گی ، بس کے مجموعی طور پر 10 اسٹاپ ہوں گے، ایک اسٹاپ کا کرایہ 10 روپے ہوگا ، فی کلو میٹر کرایہ 4 روپے ہوگا اور یہ سیٹ ٹو سیٹ چلے گی، سیفائر گروپ کی الیکٹرک بس 37 سیٹوں پر مشتمل ہے۔

صوبائی وزیرٹرانسپورٹ نے کہا کہ سیفائر گروپ کی بس مکمل طور پر الیکٹرک بس ہے، ہرماہ ان بسوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا،  رواں سال کے آخر تک 100 الیکٹرک بسیں سڑکوں پر لائی جائیں گی ،2017سے اس شعبے میں جتنا کام ہونا چاہیے تھا وہ نہیں ہوا، کورونا کی وجہ سے بہت سی چیزیں متاثر ہوئی ہیں تاہم اب الیکٹرک بس  کےمنصوبےکا پہلی مرتبہ سندھ میں آغاز ہوچکاہے۔

اویس قادر شاہ کا کہنا تھا کہ بی آرٹی کا منصوبہ بھی مکمل ہونے جارہا ہے ہم بہت جلد 250 بسز کی ٹریڈنگ کرنےجارہے ہیں۔ اس موقع پر سی ای او سفائرگروپ احمد جاوید چودھری نے کہا کہ کراچی میں پہلی الیکٹرک بس چلارہےہیں ، صوبائی حکومت نے اس سلسلے میں بھرپور تعاون کیا ہے جس پر ان کے شکر گزار ہیں۔

فواد چوہدری ٹویٹ

دوسری جانب سماجی رابطے کی ویب سائٹ ’ٹوئٹر‘ پر جاری کردہ اپنے بیان میں پاکستان تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا کہ وہ کراچی میں مسافروں کے لیے الیکٹرک بس سروس شروع کرنے کے اہم اقدام پرحکومت سندھ کو بالعموم اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور وزارت ٹرانسپورٹ کوبالخصوص مبارکباد پیش کرتے ہیں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اس حوالے سے سندھ حکومت کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرواتی ہے اور مجھے امید ہے کہ پنجاب اور خیبرپختونخوا بھی جلد یہ اقدام اٹھائیں گے۔

Back to top button