لاک ڈاؤن کے کورونا پھیلاؤ پر اثرات

 گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر سےکورونا  کے باعث مزید 75 افراد کی اموات ریکارڈ ہوئیں، کورونا سے اب تک ہونے والی اموات کی تعداد 20 ہزار 5 سو چالیس تک جا پہنچی ہے۔

 پچھلے 24 گھنٹوں میں 2ہزار 7 سو 26 افراد کورونا  سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ کورونا مثبت آنے کی شرح 3اعشاریہ6 فیصد رہی،ملک میں ایکٹو کیسز کی تعداد 59 ہزار 18 ہوگئی ہے۔

 ملک  میں آج سے 19 سال سے زائد افراد کی ویکسی نیشن  کے عمل کے لیے رجسٹریشن شروع ہوگئی ہے،گزشتہ 24 گھنٹوں میں ریکارڈ 2لاکھ 94 ہزار 364  افراد کو ویکسین لگائی گئی۔

این سی او سی کے مطابق پاکستان میں سرکاری سطح پر اب تک 64 لاکھ 24 ہزار  8 سو 73 افراد کو کورونا وائرس کی ویکسین لگائی جاچکی ہے ۔  

وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا  جس میں  کورونا وائرس سے متعلق پابندیاں جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔

کیسز کی تعداد

مراد علی شاہ نے  اجلاس میں عوام سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ اب کیسز کم ہو رہے ہیں عوام کے تعاون کا شکریہ ۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر یہ تعاون جاری رہا تو ہم جلد صورتحال پر قابو پالیں گےاور عوام  اگر اسی طرح پابندیوں پر عمل پیرا رہی تو ہم جلد کورونا کا پھیلاؤ روک سکیں گے۔

وزیر اعلی کو بتایا گیا کہ کراچی میں سختی کرنے سے کیسز  میں اضافے کی شرح میں کمی آئی ہے۔

سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے ٹوئٹ کیا کہ  کورونا وائرس کے تناظر میں  سندھ میں لگائی جانے والی پابندیوں کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں،کراچی اور حیدرآباد میں کورونا وائرس کی شرح کم ہونے لگی ہے ۔

انہوں نے ٹوئٹ کیا کہ کراچی میں 24  گھنٹوں میں کورونا وائرس  کیسزکی شرح کم ہو 8 اعشاریہ 34 فیصد ہوگئی ہے،حیدرآباد میں کورونا سے متاثرہ افراد کی شرح 4 اعشاریہ 42 فیصد ہوگئی ہے۔

 مرتضیٰ وہاب نے عوام سے کہا کہ ہر شخص کورونا ویکسی نیشن کروا کر اپنی ذمہ داری  ادا کرے۔

سندھ حکومت نے ایس ا  و پیز پر عملدرآمد کے لیے شہریوں سے مزید  تعاون جاری رکھنے کی اپیل کی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button