سندھ میں آج سے تعلیمی سرگرمیاں مکمل بحال

کراچی سمیت سندھ  بھر میں طویل وقفے کے بعد آج سے پرائمری اسکولز مکمل کھل گئے،جامعات ،کالجز اور سیکنڈری کے بعدپہلی سے پانچویں  جماعت کی کلاسز  میں بھی تدریس شروع ہوگئی،سندھ حکومت کا کہنا ہے کہ کورونا کیسز میں کمی کے مشاہدہ کے باعث سختیوں میں کمی کی جارہی ہے۔

جون کی 15 تاریخ کو چھٹی سے آٹھویں جماعت  تک تدریسی عمل شروع ہوگیا تھا جبکہ 7 جون کو نویں ،دسویں  اور جامعات تک تدریسی عمل بحال کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔

تاہم پرائمری اسکولز کھولنے کی اجازت کو 50 فیصد حاضری کے  ساتھ مشروط کردیا گیا ہے یعنی اسکولز میں ایک دن میں  صرف 50 فیصد  طلباء حاضر ہوسکیں گے اور دوسرے دن دوسرے 50 فیصد  طلباء   حاضر ہوسکیں گے۔

سندھ کی کورونا ٹاسک فورس  کی جانب سے اسکولز میں  اساتذہ کو سختی کے ساتھ کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کی ہدایت بھی کی گئیں ہیں ۔

ترجمان سندھ حکومت مرتضی وہاب نے کہا کہ سندھ میں کرونا کیسز میں آتی مسلسل کمی کے باعث پرائمری اسکولز کو کھولنے کی طرف جارہے ہیں لیکن صرف  50 فیصد ایڈمیشن کے ساتھ۔

مزید براں  کورونا ٹاسک فورس سندھ نے کراچی سمیت سندھ بھر کے امیوزمنٹ پارکس ،انڈور جمز اور درگاہیں بھی 28 جون سے کھولنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ کراچی میں کورونا وائرس کیسز کی تشخیص کی شرح8 اعشاریہ 08 اور حیدرآباد میں  4 اعشاریہ 3 فیصد پر آگئی ہے۔

وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ  کورونا کیسز میں کمی تب تک ہوتی رہے گی  جب تک عوام ایس او پیز کی پابندی کرتے رہیں گے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button