پاکستان میں فائزر کی ویکسین کی تقسیم

وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا ہے کہ فائزر کوویڈ ۔19 ویکسین صرف کمزور مدافعتی نظام کے حامل افرادکو دی جائے گی۔

اطلاعات کے مطابق فیصل سلطان نے بتایا کہ  صوبوں اور وفاقی اکائیوں میں فائزر ویکسین کی تقسیم شروع ہوچکی ہے۔ فائزر ویکسین گذشتہ ماہ ملک پہنچی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ کمزور قوت مدافعت کے بارے میں  گائیڈ لائنز تیار کرلی گئی ہیں جو کچھ دیر میں منسٹری آف ہیلتھ کے ویب پورٹل پر شائع کردی جائیں گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کو یونیسف کی مدد سے کوووکس کے ذریعے 106،000 ویکسین کی خوراکیں موصول ہوئی ہیں اورپاکستان نے صوبوں میں فائزر ویکسین کی خوراکوں کی تقسیم شروع کردی۔

یونیسیف نے کہا  ہے کہ فائزر ویکسین کو جاری ویکسی نیشن مہم میں ملک بھر میں استعمال کیا جائے ۔یہ دوسری کھیپ تھی جو پاکستان میں  پہنچی ،پہلی  وہ تھی جو 8 مئی کو پہنچی  تھی جس میں آسٹرا زینیکا ویکسین کی 1،248،400 خوراکیں تھیں۔

ہر صوبہ کتنا حاصل کر رہا ہے؟

ملک میں مذکورہ ویکسین کس طرح تقسیم کی جائے گی اس کے بارے میں تفصیلات بتاتے ہوئے وزیر اعظم کے معاون نے کہا کہ وفاقی حکومت ویکسین کی 51،000 خوراکیں تقسیم کررہی ہے۔

صوبائی لحاظ سے فراہمی  کوتقسیم کرتے ہوئے ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ پنجاب کو ایم آر این اے ویکسین کی 26،000 خوراکیں ملیں گی جبکہ سندھ کو 12،000 خوراکیں ملیں گی۔

انہوں نے کہا کہ خیبر پختون خوا کو 8000 خوراکیں ارسال کردی گئیں ہیں جبکہ بلوچستان کوویکسین کی دو ہزار خوراکیں دی گئیں ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ فائزر ویکسین کی ایک ہزار خوراکیں اسلام آباد ، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان بھیجی جائیں گی۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ فائزر ویکسین کا استعمال پاکستان کے 15 شہروں میں لوگوں کو کورونا سے بچاؤ کی ویکسین لگانے کے لئے کیا جائے گا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button