سندھ میں جمبہوریت انتقال کر گئی

سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ نے  سندھ حکومت کو نااہل کرانے کے لیے عدالت جانے کا اعلان کردیا ہے،انکا کہنا ہے کہ سندھ میں متعدد آرٹیکلز کی خلاف ورزی ہورہی ہے جسکے خلاف  ہم عدالتوں میں پٹیشن فائل کریں گے۔

انہوں نے  بجٹ  منظوری کے وقت  اعتراضی تقریر نہ کرنے دینے کے خلاف اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ جو میرا قانونی حق تھا وہ نہیں ملا،اب ہم قانونی عدالتوں میں بھی جائیں گےاورعوامی عدالتوں میں بھی جائیں گے ۔

فریال تالپور اور شرجیل میمن تک پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے ممبر ہیں لیکن کوئی ایک بھی ممبر  پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں اپوزیشن کانہیں ہے،جسکا مطلب ہے کہ سندھ میں  جمبوریت کا قتل ہوگیا  ہے۔

انہوں نے منظور شدہ بجٹ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ  یہ ایک ایسا بجٹ ہے جسے اس  وزیر اعلی نے پیش کیا ہے  جس کی  جماعت کے بارے میں  اکاؤنٹنٹ جنرل آف پاکستان کے کتاب چوں کا کہنا ہے کہ  14 سو ارب روپے کی کرپشن  کی گئی ہے،انہوں نے عزم کا اظہار کیا کہ جمبہوریت کے قاتلوں کو معاف نہیں کریں گی۔

سندھ میں اندھیرا ہی اندھیرا

انکا یہ بھی کہنا تھا کہ آڈیٹر  جنرل کے مطابق سندھ میں   13 سالوں کے دوران 14 سو ارب کی کرپشن ہوئی انہوں نے کہا کہ 13 سال سے  سندھ میں اندھیرا ہی اندھیرا ہے ۔

حلیم عادل نے  بینظیر انکم سپورٹ پروگرام پر طنز  کرتے ہوئے کہا کہ تین سال سے زکوۃ فنڈز جاری نہیں کیے جارہے  کہ ہم نئی لسٹیں بنارہے ہیں اور  جب رقم جمع ہوگئی تو  اسے پتہ نہیں کونسا بینظیر کارڈ بنا کر جاری کر رہے ہیں۔

بلاول   زرداری کو مخاطب کرتے ہوئے  اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ  بلاول صاحب آپ سندھی نہیں  ہیں،جنہوں نے  سندھ کو ایڈز لگادی،سندھ کو کتوں سے کٹوا دیا ،تھر میں بچے مروا دیے، روڈیں تباہ کردیں ،راستے تباہ کردیے،ڈاکو راج قائم کردیا۔بلاول سندھی نہیں انہیں تو سندھی آتی ہی نہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button