کورونا کیسز میں پھر اضافہ

ملک بھر میں کورونا کے باعث ہونے والی اموات اور کیسز میں  اضافہ  ہوا ہے،ایک دن میں کورونا سے مزید 34 افراد کا انتقال ہوگیا ہے  جسکے بعد ملک میں اب تک  کورونا کے باعث  ہونے والی اموات کی تعداد 22 ہزار379 ہوگئی ہے۔

جبکہ این سی او سی کے مطابق 24 گھنٹوں کے دوران 48 ہزار کورونا ٹیسٹ کیے گئے اور پچھلے 24 گھنٹوں میں 1400 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے  اور  ایک بار پھر کورونا مثبت آنے کی شرح 3 فیصد کے قریب پہنچ گئی ہے۔

پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں کورونا مثبت آنے کی شرح 2 اعشاریہ91 فیصد رہی ،این سی او سی کے مطابق ملک میں کورونا کے فعال کیسز 23 ہزار 319 ہیں جبکہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے   9سو 57 مریض صحت یاب ہوئے ہیں۔

اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری اور راولپنڈی  میں کورونا کیسز  میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے کیونکہ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران مزید 104 مریضوں کے کورونا ٹیسٹ مثبت آئے ہیں  جو کہ پچھلے چار ہفتوں میں جڑواں شہروں سے یومیہ رپورٹ ہونے والے کیسز کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔

راولپنڈی میں کورونا

جمعہ کے روز راولپنڈی میں کورونا وائرس کی وجہ سے ایک اور شخص کی موت ہوگئی جس کے بعد راولپنڈی میں کورونا سےانتقال کرنے والے افراد کی مجموعی تعداد  994 ہوگئی  ہے جبکہ آئی سی ٹی(اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری) میں  779 مریض کوویڈ 19 کے باعث وفات پاچکے ہیں اور  اسلام آباد راولپنڈی سے 107،636ٹیسٹ  میں سے  104 نئے کیسز کی تصدیق  ہوئی ہے۔

یہ بات اہم ہے کہ اسلام آباد ،راولپنڈی سے مثبت آنے والے کیسز کی تعداد میں پچھلے تین دن سے ایک نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا جارہا ہے جس میں گذشتہ 72 گھنٹوں کے دوران 226 نئے کیسز کی رپورٹنگ کی گئی ہے جس میں اوسطا روزانہ 75 سے زیادہ  کیسزریکارڈ کیے گئے ہیں۔

یہ امر تشویشناک ہے کہ وفاقی دارالحکومت سے گذشتہ دو روز سے فعال کیسز  کی تعداد میں بھی اضافہ ہورہا ہے کیونکہ گذشتہ 48 گھنٹوں کے دوران آئی سی ٹی کی جانب سے فعال کیسز کے موجودہ  حلقے میں 71 فعال کیسز  شامل ہوئے  ہیں۔

انچارج ڈسٹرکٹ کوویڈ ۔19 سیل راولپنڈی ڈاکٹر حافظ محمد جواد زاہد کے مطابق راولپنڈی میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1324 ٹیسٹ کیے گئے جن میں مجموعی طور پر 27 مریضوں کے ٹیسٹ مثبت آئے ہیں جو مثبت شرح کے اعتبار سے 2.03 فیصد ہے۔

ذرائع کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 73 مریضوں کےآئی سی ٹی سے اور 31 راولپنڈی سے  مثبت ٹیسٹ رپورٹ کیے گئے ہیں ۔

راولپنڈی سے اب تک مجموعی طور پر 24،857 مریض رپورٹ ہوئے ہیں جن میں سے 994 اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جبکہ 23،711 اس بیماری  سے صحت یاب  ہوگئے ہیں۔ جمعہ کے روز راولپنڈی سے اس بیماری کے مجموعی طور پر 152 فعال کیسز رپورٹ  ہوئے ہیں۔

وفاقی دارالحکومت میں کورونا

ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفس راولپنڈی کے مطابق راولپنڈی سے تعلق رکھنے والے 21 مریضوں کو شہر کے اسپتالوں میں داخل کیا گیا  ہےجبکہ جمعہ کے روز 131 افراد گھروں میں ہی قرنطینہ کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ آج تک آئی سی ٹی سے کورونا کے مجموعی طور پر 82،779  مثبت کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جن میں سے 80،978 صحت یاب ہوئے ہیں جبکہ 779 اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔

جمعہ کے روز وفاقی دارالحکومت سے فعال  کیسزکی تعداد گذشتہ 24 گھنٹوں میں 50 فعال کیسز کے اضافے کے بعد ایک ہزار دو سو چھپن ہوگئی ہے۔

 وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے  پہلے ہی متنبہ کیا ہے کہ اگر لوگوں  نے احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد چھوڑدیا   تو کورونا وبا کی چوتھی لہر سے پاکستان کو بچانا مشکل ہو سکتا ہے۔

اپنے ٹوئٹ میں انہوں نے کہا  ہےکہ ایس او پی پر عمل درآمد  نہ کرنے اور ویکسین  لگانے کے پروگرام کےعدم  استحکام  کی وجہ سے  کورونا کی چوتھی لہر جولائی میں پاکستان میں ابھر سکتی ہے۔

انہوں نے خطرے کی اس گھڑی میں عوام سے اپیل کی کہ  وہ ایس ا و پیز پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں اور  جلد از جلد ویکسی نیشن کروائیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button