کاروبار کے اوقات کار میں پھر رد وبدل

حکومت سندھ نے ایک بار پھر فیصلہ کیا ہے کہ وہ "محفوظ دن” یعنی کراچی میں کاروبار کے کاروباری دنوں کو تبدیل کرے گا ،محکمہ داخلہ کی طرف سے جمعرات کو جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق ہفتہ اور اتوار کے بجائے اب تمام بازار اور کاروبار جمعہ اور اتوار کو بند رہیں گے  جبکہ ہفتے کو کاروباری سرگرمیاں جاری رہیں گی ۔

اس سے قبل حکومت سندھ نے کہا تھا کہ شام کے 6 بجے تک صوبہ بھر میں کاروبار بند ہوگا کیونکہ صوبہ کورونا وائرس کی تیسری لہر کا مقابلہ کررہا ہے۔ پہلے جاری کردہ ایک نوٹیفکیشن کے مطابق کاروبار کو سحری سے شام 6 بجے تک چلنے کی اجازت تھی اور دو دن یعنی ہفتے اور اتوار کو بند رہنے کی اجازت دی گئی تھی ۔

ہر طرح کی سیاسی ، ثقافتی ، معاشرتی اور کھیلوں کی سرگرمیوں پر پابندی ہوگی اور ساتھ ہی ریستوراں میں بھی ان ڈور کھا نے کی سہولیات کی فراہمی پر پابندی ہوگی، افطاری کے وقت سے رات کے 12 بجے تک بیرونی کھانے کی سہولیات کی اجازت ہوگی۔

مزارات ، درگاہیں اور سنیما ہال مکمل طور پر بند ہوں گے ، جبکہ اندرونی اور بیرونی شادیوں کے پروگراموں پر مکمل پابندی ہوگی۔نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ ہفتہ اور اتوار کو بین الصوبائی ٹرانسپورٹ خدمات بھی بند رہیں گی۔

محکمہ داخلہ نے 8 فیصد  سے زیادہ کورونا وائرس مثبت ہونے کی اطلاع دینے والے علاقوں میں وسیع تر لاک ڈاؤن کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے ۔ سکھر کے تاجروں کی درخواست بھی منظور کرلی گئی ہے، سکھر میں اتوار کو دکانیں کھلی رہیں گی اور جمعہ اور ہفتہ بند ہوں گی ۔

آل پاکستان انجمن تاجران نے حکومت کے ہفتے میں دو دن بازار اور تجارتی سرگرمیاں بند رکھنے کے فیصلے کو مسترد کردیا ہے۔ آل پاکستان انجمن تاجران یونین نے مطالبہ کیا ہے کہ وزیر اعلی سندھ فوری طور پر ہر ہفتے چھ دن کے لئے بازاروں کو کھولنے کا حکم دیں،کاروباری اوقات میں صبح  10 بجے سےرات 2 بجے تک توسیع کی جانی چاہئے۔

Back to top button