بلوچستان دہشتگردوں کے نشانے پر

کوئٹہ کے نواحی علاقے ہزار گنجی میں سی ٹی ڈی (کاؤنٹر ٹیرریزم ڈیپارٹمنٹ) نے بڑی کاروائی کرتے ہوئے 5 دہشتگرد ہلاک کردیے۔

گزشتہ روز سی ٹی ڈی کو اطلاع ملی تھی کہ دہشتگرد گرد ہزار گنجی کے علاقے میں ایک کمپاؤنڈ میں موجود ہیں ،اطلاع پر سی ٹی ڈی نے وہاں کے دیگر اداروں کے ساتھ مل کر کاروائی کی۔

تفصیلات کے مطابق سیکیورٹی فورسز  جیسے ہی کمپاؤنڈ کے قریب پہنچیں تو دہشتگردوں نے فائرنگ شروع کردی  جس کے بدلے میں فورسز کی جانب سے بھی فائرنگ کی گئی اور فائرنگ کے تبادلے میں  5 دہشتگرد ہلاک ہو گئے۔

ہلاک ہونے والے دہشتگردوں کی لاشیں  سول ہسپتال منتقل کردی گئیں  ہیں ، ذرائع کا کہنا ہے کہ دہشتگردوں کے کمپاؤنڈ  سے  بھاری تعداد میں اسلحہ اور بارود برآمد کرلیا گیا ہے۔

اہلکاروں نے علاقے کو گھیرے میں لے رکھا ہے اور ہلاک دہشت گردوں سے متعلق مزید تفتیش جاری ہے۔

دہشتگردی کے پے درپے واقعات

واضح رہے کہ گزشتہ عرصہ میں کوئٹہ میں دہشتگردی کے پے درپے واقعات نے  بلوچستان کے امن و امان کی صورتحال کو مشکوک بنادیا ہے۔

سرینہ ہوٹل ،پولیس وین بم دھماکہ اوریکم جولائی کو کوئٹہ ایئرپورٹ اسٹریٹ پر دھماکہ ہوا جس میں کئی قیمتی جانوں اور املاک کو نقصان پہنچا۔

ایئرپورٹ اسٹریٹ دھماکے کے بعد وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ متعلقہ دہشت گردوں کو بخشا نہیں جائے گا۔

انہوں نے کہا تھا کہ جب تک دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ نہیں دیا جاتا ، حکومت  سکون سے نہیں بیٹھے گی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق گزشتہ ماہ دہشتگردوں نے تربت کے قریب فوجیوں پر حملہ کیا جس میں پاک فوج کا ایک فوجی  جوان شہید ہوا۔ شہید سولجر نائک عقیل عباس ضلع چکوال کے گاؤں مہرو پیلو کا رہائشی تھا۔

جبکہ اس سے کچھ دن قبل بلوچستان میں ہی دہشتگرد حملے میں 3 فوجی جوان جام  شہادت نوش کرچکے تھے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق  عسکریت پسندوں نے چھوٹے ہتھیاروں کا استعمال کرتے ہوئے فوجیوں پر حملہ کیا تھا۔ فوج کے میڈیا ونگ نے واقعے کے فورا بعد ہی بیان دیاتھا کہ "ریاست دشمن قوتوں کی حمایت یافتہ غیرمعمولی عناصر کی جانب سے اس طرح کی بزدلانہ کارروائیوں سے بلوچستان میں سخت محنت سے حاصل ہونے والے امن اور خوشحالی کو سبوتاژ نہیں کرنے دے گی”۔

سیکیورٹی فورسز خون اور جانوں کی قیمت پر بھی دہشتگردوں کے مذموم عزائم کو بے اثر کرنے کا عزم رکھتی ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button