بابر اعظم کلین سوئپ کرنے کے لیے پرعزم

مئی 7 کو ہرارے اسپورٹس کلب میں زمبابوے اور پاکستان دوسرے اور  آخری ٹیسٹ میچ کے لئے مدمقابل ہوں گے ،بابراعظم پاکستان ٹیسٹ کپتان کی حیثیت سے اپنے ناقابل شکست ریکارڈ کو جاری رکھنے کے خواہاں ہیں ۔

پاکستان نے زمبابوے کو  ایک اننگز اور 116 رنز سے ہرا کر پہلا ٹیسٹ جیتا تھا، حسن علی کی نو وکٹیں اور فواد عالم کی 140رنز کی مدد سے پاکستان کو آرام سے فتح مل گئی تھی تاہم ایک مستحکم ٹیم کی جگہ پر یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ کیا پاکستان حارث رؤف کو آخری ٹیسٹ میں موقع دیتا ہے یا نہیں ۔

اس بار زمبابوے سے بیٹنگ اور بالنگ کے ساتھ بہتر کارکردگی کی امید ہے، پچھلے میچ میں کیون کاسوزا اور ترسئی مساکنڈہ کی ابتدائی جوڑی کے علاوہ زمبابوے میں سے کوئی بھی بلے باز ٹیسٹ کی دوسری اننگز میں پاکستان کے بولنگ اٹیک سے نمٹنے کے قابل نہیں رہا تھا۔

توقع ہے کہ ان کے باقاعدہ کپتان شان ولیمز انجری کی وجہ سے پہلا ٹیسٹ نہ کھیلنے کے بعد اب اس ٹیسٹ میں لوٹیں گے، ممکنہ طور پر وہ ترسائی مساکندا یا رائے کائ کی جگہ لیں گے، میزبان ٹیم لیوک جونگ وے کو بھی موقع دینے کے خواہاں ہوسکتے ہیں ، جن کا ٹی ٹوئنٹی میں کامیاب کیرئیر ہے ۔

پہلے ٹیسٹ میں زمبابوے نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا انتخاب کیا تھا، ابتدائی وکٹیں کھونے کے بعد ، رائے کائی نے بحالی کی قیادت کی جس کی وجہ سے وہ پہلی اننگز کا مجموعی اسکور 176 رن بناسکے۔

پاکستانی کپتان بابر اعظم نے کہا ہے کہ وہ دوسرا ٹیسٹ زمبابوے کے خلاف جیتنے والے امتزاج کے ساتھ کھیلیں گے۔

Back to top button