قومی بینک کے سرورز پر سائبر حملہ

کراچی : قومی نیشنل بینک آف پاکستان نے کہا ہے کے 29 اکتوبر کی رات اور 30 اکتوبر کی صبح کے درمیان نیشنل بینک کے سرورز پر سائبر حملہ کیا گیا تھا ۔

اپنے ایک بیان میں نیشنل بینک کے مطابق سائبر حملے سے بینک خدمات کا سلسلہ جزوی طور پر متاثر ہوا تھا ، تاہم متاثرہ سسٹم کو بروقت الگ کر دیا گیا تھا ، اس لیے بینک کو کسی قسم کے ڈیٹا یا مالیاتی نقصان کا سامنا نہیں کرنا پڑا ہے ۔

خاص ترجمان نیشنل بینک کے مطابق سائبر حملے کے تدارک اور سسٹم کی مکمل درستی کے لیے دستیاب وسائل اور ملکی و غیر ملکی ماہرین کی خدمات فوری بروئے کار لائی جارہی ہیں ۔

اس ترجمان کے مزید مطابق فی الحال صارفین کو خدمات کی فراہمی اب تک معطل ہے ، پیر کی صبح سے بنیادی بینکنگ خدمات کی بحالی شاید متوقع ہے ۔

اس سے قبل ایف بی آر ر بھی حملہ ہوا تھا ذرائع کے مطابق ایف بی آر نے نیا ڈیٹا سینٹر بنانا شروع کردیا تھا اور ایف بی آر ٹیمیں مینوئل طریقے سے ڈیٹا اپ لوڈ کرنے میں مصروف تھیں ۔

مزید ان ذرائع کا کہنا تھا کہ ایف بی آر ٹیم ہیکرز سے ڈیٹا واپس لینے میں ناکام ہوگئی ہیں اور ڈیٹا سینٹر کو مکمل طور بحال کرنے میں اب وقت لگے گا ۔

اس کے علاوہ دوسری جانب ایف بی آر حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ ایف بی آر کا ڈیٹا ہیک نہیں ہوا اور ڈیٹا سینٹر کو 100 فیصد بحال بھی کردیا گیا تھا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button