حج کے لیے چینی ویکسین کی منظوری

سعودی سفیر نے وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کو یقین دہانی کرائی ہے کہ  سعودی مملکت اپنی منظور شدہ ویکسینوں کی فہرست میں چینی کوڈ 19 ویکسین  بھی شامل کرے گی۔

جمعہ کو وزیراعلیٰ ہاؤس کی طرف سے جاری کردہ ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں سعودی سفیر نواف سعید المالکی اور ساتھ قونصل جنرل بندر الدیال نے کراچی میں وزیر اعلی سندھ مراد  علی شاہ سے ملاقات کی۔

وزیراعلیٰ مراد  علی شاہ نے سعودی سفارتی عملہ کو حج اور عمرہ زائرین کو درپیش مشکلات سے آگاہ کیا کیونکہ بیشتر پاکستانیوں کو ملک میں چینی ویکسینز لگائی جارہی ہیں جنھیں عالمی ادارہ صحت نے بھی منظوری دے دی ہےاور حج کی خواہش رکھنے والے افراد کے پاس موجود ویکسی نیشن  سرٹیفیکٹ میں چینی ویکسین کا اندراج ہے۔

قابل قبول ویکسینز کی فہرست

دوسری جانب سعودی مملکت نے حج کے لیے قابل قبول ویکسینز کی ایک فہرست جاری کی ہے جس میں فائزر ، آکسفورڈ کے آسٹرا زینیکا ، موڈرنہ اور جانسن اینڈ جانسن شامل ہیں اور اس  فہرست میں چین میں تیار کی جانے والی ویکسین شامل نہیں ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے سعودی سفیر کے ساتھ ملاقات میں سعودی حکومت سے عازمین کے لئے چینی ویکسین کی منظوری کی درخواست کی تاکہ پاکستانی شہری اس سال حج ادا کرسکیں۔وزیراعلیٰ نے سعودی عہدیدار کو آگاہ کیا  کہ حج ویکسینز کی فہرست میں چینی ویکسین شامل نہ کرنے پر پاکستانی لوگ مایوس ہیں۔

سعودی سفیر نے وزیر اعلی کی درخواست پر چینی ویکسین کو عازمین حج کے لیے قابل قبول  شمار کرانے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

گذشتہ ماہ دفتر خارجہ نے  بھی  سعودی حکومت سے اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنے کی اپیل کی تھی تاکہ پاکستانیوں کے لیے اس سال حج کی ادئیگی میں آنے والی رکاوٹ کو دور کیا جاسکے۔

دفتر خارجہ نے سعودی حکام سے سائینوفارم اور سائینوویک سمیت چینی ویکسینوں کو اپنے منظور شدہ ویکسینز کی فہرست میں رجسٹر کرنے کو کہا تھا۔

دفتر خارجہ نے  سعودی ریاست کو مطلع کیا کہ چین کے علاوہ دیگر ممالک سے ویکسین لینا مشکل ہےاور پاکستانیوں کی ایک بڑی آبادی کو چینی ویکسین پلائی جا چکی ہے، اور طبی ماہرین  نے ایک ویکسین کے بعد دوسری  کمپنی کی ویکسین دینے کو شدید مضر صحت بتایا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button